عمران خان کیس میں جمائماکےخط کی حثیت بھی قطری خط جیسی ہے،لطیف کھوسہ
The news is by your side.

Advertisement

عمران خان کیس میں جمائماکےخط کی حیثیت بھی قطری خط جیسی ہے،لطیف کھوسہ

اسلام آباد : پیپلز پارٹی کے رہنمالطیف کھوسہ کا کہنا ہے کہ پرویزمشرف اس قابل نہیں کہ سیاست میں اس کا نام لیاجائے، مسلم لیگ کاشیرازہ بکھرچکاساراخاندان اڈیالہ جیل میں ہوگا،عمران خان کیس میں جمائماکےخط کی حثیت بھی قطری خط جیسی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کے رہنمالطیف کھوسہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مشرف مفرور ہےبےنظیرقتل کیس میں سزائےموت مانگی ہے، پرویزمشرف اس قابل نہیں کہ سیاست میں اس کا نام لیاجائے۔

لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ پنجاب میں پیپلزپارٹی کے خاتمے کی باتیں کرنیوالے اپنا حال دیکھ چکے مسلم لیگ کاشیرازہ بکھرچکاساراخاندان اڈیالہ جیل میں ہوگا۔

عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے پی پی رہنما نے کہا کہ نیازی ایکسپریس بھی مسلم لیگ کی کشتی میں سوارہے عمران خان نےاپنی آف شورکمپنیاں چھپاکرجھوٹ بولا، عمران خان کیس میں جمائماکےخط کی حثیت بھی قطری خط جیسی ہے۔

انکا مزید کہنا تھا کہ پہلےعمران خان اورپھرجہانگیرترین نااہل ہوں گے، تحریک انصاف کبھی بھی شاہ محمودقریشی کےکندھوں پرنہیں چلےگی، پیپلزپارٹی کو للکارنے والے خود کسی کی پکار میں آگئے ہیں۔

پاکستان میں دوہراقانون ہے،ایک قانون پی پی اور دوسرا بادشاہ سلامت کیلئے، لطیف کھوسہ

اس سے قبل پیپلز پارٹی کےرہنمالطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں دوہراقانون ہے،ایک قانون پی پی اور دوسرا بادشاہ سلامت کیلئے، وعدہ معاف گواہ انحراف کرتا ہےتو اسے مجرم کے برابر سزا ملتی ہے،لطیف کھوسہ

لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ نیب کوشریف برادران کےخلاف فوری کارروائی کرنی چاہیےتھی، آئین اورقانون کےتحت کسی بھی تفتیش پرقدغن نہیں لگائی جا سکتی۔


مزید پڑھیں : نواز شریف کو بچانے سعودی جہاز اور شہزادہ نہیں آئے گا، لطیف کھوسہ


عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ عمران خان نےضیااللہ آفریدی کےخلاف ریفرنس دائرکررکھاہے، عمران خان کے زیرو کرپشن کے ایجنڈے پر عمل نہیں ہو رہا، اپنے وزیراعلیٰ خیبرپختونخوامیں کرپشن کر رہے ہیں، خیبرپختونخوامیں احتساب کانام ونشان نہیں ، ضیااللہ آفریدی کوکرپشن کےخلاف آوازاٹھانےپرنکالا گیا، آپ ہی اپنی اداؤں پر ذرا غورکریں،ہم اگر عرض کریں گے تو شکایت ہوگی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں