قانون کا اطلاق تمام اداروں‌ پر ہونا چاہیے، فرحت اللہ بابر farhat ullah babar
The news is by your side.

Advertisement

قانون کا اطلاق تمام اداروں‌ پر ہونا چاہیے، فرحت اللہ بابر

اسلام آباد: پیپلزپارٹی کے رہنماء اور سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا ہے کہ ایسا قانون بنایا جائے جس کا اطلاق تمام اداروں پر ہو اور اس میں بہتری کی گنجائش بھی موجود ہو۔

اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا کہ قانون میں بہتری کی گنجائش رہتی ہے لہذا ایسے قوانین بنائے جائیں جن کا اطلاق تمام اداروں پر ہو۔

انہوں نے کہا کہ اطلاعات تک رسائی کا بل صوبائی اسمبلیوں میں منظور کیا گیا تاہم قومی اسمبلی میں اسے 5 بار منظور کروانے کی کوشش کی گئی تاہم یہ کوشش ناکام رہی۔

فرحت اللہ بابر نے کہا کہ قومی سلامتی کی حساس باتوں کو افشاں نہیں کیا جاسکتا، سلامتی اداروں سے جوہری ہتھیاروں کے بارے میں کسی کو نہیں پوچھنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ پارلیمان کا کام قانون سازی کرنا ہے اس کی غلط تشریح یا عملدرآمد نہ ہونے کی ذمہ داری پارلیمنٹ کی نہیں، قوانین بنا کر ان کی خلاف ورزی ڈان لیکس کی صورت میں کی گئی۔

پی پی کے سینیٹر نے کہا کہ پرویز مشرف پر غداری کا مقدمہ تھا مگر اس کے باوجود وہ بیرونِ ملک فرار ہوئے، گاڑی کارخ عدالت کی طرف تھا مگر اُسے اسپتال کی طرف موڑاگیا،عدالتیں موجودتھیں مگر کسی ادارے سےکوئی جواب نہ لےسکا۔


 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں