The news is by your side.

Advertisement

ہنگامہ آرائی کرنے والے اراکین قومی اسمبلی پر آج ایوان میں پابندی کا امکان

اسلام آباد : ہنگامہ آرائی کرنےوالےاراکین قومی اسمبلی پرآج ایوان میں پابندی کاامکان ہے ، اسپیکرقومی اسمبلی اسد قیصر نے ہنگامہ آرائی کی تحقیقات کےلیےفوٹیجزطلب کرلی ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی گزشتہ روز ہونے والی ہنگامہ آرائی کی تحقیقات کےلیےفوٹیجزطلب کرلی گئیں، فوٹیج اسپیکرقومی اسمبلی اسد قیصرکی جانب سے طلب کی گئی ہے، جس کے بعد ہنگامہ آرائی کرنےوالےاراکین قومی اسمبلی پرآج ایوان میں پابندی کاامکان ہے۔

یاد رہے کہ بجٹ پیش ہونے کے بعد آج اسیپکر اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا، جس میں مبینہ طور پر اپوزیشن جماعت کے ایک رکن کی جانب سے غیر پارلیمانی زبان کا استعمال کیا گیا، بعد ازاں دونوں طرف کے اراکین نے ایک دوسرے پر چڑھائی کی اور نوبت ہاتھا پائی تک بھی پہنچ گئی۔

قائدِ حزب اختلاف کی تقریر کے دوران حکومتی اور اپوزیشن اراکین نے ایک دوسرے پر بجٹ کی کاپیاں پھینکیں، جس کے نتیجے میں تحریک انصاف کی خاتون رکن اسمبلی ملائیکہ بخاری کی آنکھ زخمی بھی ہوئی۔

بعد ازاں اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے اسپیکر اسد قیصر نے قومی اسمبلی میں پیش آنے والے واقعات پر تحقیقات کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ’آج کے واقعات کی مکمل تحقیقات کرائی جائیں گی‘۔

انہوں نے اعلان کیا تھا کہ ’غیرپارلیمانی یا بد زبانی کرنے والے ارکان کو (بطور سزا) کل ایوان میں داخلےکی اجازت نہیں ہوگی، ’اپوزیشن اور حکومتی اراکین نے آج ہنگامہ آرائی کے دوران ایک دوسرے کے خلاف نازیبا زبان استعمال کی‘۔

اسد قیصر نے اپوزیشن اور حکومتی اراکین کے رویے کو قابلِ مذمت اور مایوس کن قرار دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں