The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف‘ وزیراعظم اور16 اراکینِ اسمبلی کے بیانات نشرکرنے پرپابندی

لاہور: ہائی کورٹ نے نواز شریف، شہباز شریف اور وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سمیت 16 ارکین اسمبلی کے عدلیہ مخالف بیانات نشر کرنےپر پابندی عائد کردی۔

تفصیلات کے مطابق آج لاہور ہائی کورٹ میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، شہباز شریف سمیت پندرہ لیگی اراکین اسمبلی کی نااہلی کے لیے درخواست پر سماعت ہوئی۔

درخواست گزار نے مؤقف اپنایا کہ ایم کیو ایم کے بانی کے اس طرح کے بیانات پر معاملہ فل بنچ میں زیر سماعت ہے، کیس وہاں بھجوایا جائے جبکہ سرکاری وکیل نے کہا کہ درخواست قابل سماعت نہیں، مسترد کی جائے۔

 سپریم کورٹ میں نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر*

 درخواست گزار کے وکیل کا مؤقف تھا کہ شہباز شریف سمیت پندرہ لیگی سیاستدان عدلیہ خلاف مہم چلا رہے ہیں، انہیں نااہل قرار دیا جائے۔

یہ بھی استدعا کی گئی کہ عدلیہ مخالف مہم چلانے والے لیگی اراکین اسمبلی کے خلاف توہین ِعدالت کی کارروائی کی جائے اورنواز شریف کے خلاف توہینِ عدالت اور غداری کا مقدمہ درج کرنے کا بھی حکم دیا جائے۔ درخواست گزار نے یہ استدعا بھی کی کہ عدلیہ کیخلاف لیگی سیاستدانوں کی میڈیا کوریج پر بھی پابندی عائد کی جائے۔

دلائل سننے کے بعد عدالت نے نواز شریف، شہباز شریف اور وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سمیت 16 ارکین اسمبلی کے عدلیہ مخالف بیانات نشر کرنے سے روک دیا اور چیئرمین پیمرا اور کونسل آف کمپلینٹ سے جواب طلب کر لیا۔

یاد رہے کہ سابق وزیراعظم نوا ز شریف نے نا اہلی کے بعد جی ٹی روڈ کے راستے لاہور جاتے ہوئے متعدد مقامات پر خطاب کرتے ہوئے عدلیہ کے فیصلے اور ججز کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا جس پر مختلف سیاسی اور عوامی حلقوں کی جانب سے اظہارِ برہمی کیا گیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں