The news is by your side.

Advertisement

لاہورہائی کورٹ نے پنجاب ریونیواتھارٹی کوکالعدم قراردےدیا

لاہور: ہائی کورٹ نے پنجاب ریونیو اتھارٹی کی تشکیل اورچئیرمین کی تقرری کو کالعدم قراردے دیا، عدالت نے ان کمنگ کالز پر سروسز ٹیکس کی وصولی سمیت سال دو ہزار بارہ سے آج تک وصول کئے جانے والے ٹیکسز کی وصولی کو بھی کالعدم قراردیا ہے۔

لاہورہائیکورٹ کے جسٹس سید منصور علی شاہ نے کیس کی سماعت کی، دو سو پچاس سے زائد درخواست گزاروں کی جانب سے عدالت کو آگاہ کیا گیا کہ پنجاب ریونیو اتھارٹی کے بورڈ آف گورنرز کی سال دو ہزاربارہ سے تعیناتی نہیں کی گئی۔ بورڈ آف گورنرزکی تعیناتی کے بغیر ہی چئیرمین اتھارٹی ون مین شو کے ذریعے ان کمنگ کالز پر سروسز ٹیکس کی وصولی سمیت غیر قانونی طور پر متعدد نوعیت کے ٹیکس وصول کرنے کے احکامات دے رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ حکومت پنجاب اب تک اربوں روپے کے غیرقانونی ٹیکس وصول کر چکی ہے، پنجاب ریونیو اتھارٹی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اتھارٹی کی جانب سے کئے گئے تمام فیصلوں کو آرڈیننس کے ذریعے قانونی تحفظ دے دیا گیا ہے جس پر عدالت نے فریقین کے وکلاءکے دلائل سنے کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے پنجاب ریونیو اتھارٹی کی تشکیل اور چئیرمین کی تقرری کو کالعدم قرار دے دیاہے۔

عدالت نے ان کمنگ کالز پر سروسز ٹیکس کی وصولی سمیت سال دو ہزار بارہ سے آج تک وصول کئے جانے والے ٹیکسز کی وصولی کو بھی کالعدم قراردے دیا۔

عدالت نے پنجاب ریونیو اتھارٹی کی جانب سے بھجوائے گئے ٹیکس نوٹسزپرفوری طور پرعمل درآمد بھی روکنے کا حکم دے دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں