The news is by your side.

Advertisement

حرام اجزاء ملی کھانے پینے کی اشیاء کی سرعام فروخت ، عدالت سخت برہم

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے حرام اجزاء ملی کھانے پینے کی اشیا کی سرعام فروخت پر سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے چیف سیکرٹری کو ذاتی حیثیت میں پیرکے روز پیش ہونے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں حرام اجزاء ملی کھانے پینے کی اشیا کی فروخت کیخلاف درخواست پر سماعت ہوئی، عدالت نے چیرمین حلال فوڈ اتھارٹی کی کارگردگی پر سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے چیئرمین حلال فوڈ اتھارٹی کو مکمل رپورٹ جمع کروانے کا حکم دے دیا۔

درخواست میں کہا گیا کہ حرام اجزاملی کھانے پینےکی اشیاسرعام فروخت ہورہی ہیں ، جس پر عدالت نے سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا دیکھیں چیئرمین حلال فوڈ کیا فروخت ہورہا ہے، یہاں تو جگہ جگہ حرام اجزاملی اشیا فروخت ہو رہی ہیں۔

جسٹس طارق سلیم شیخ نے کہا یہ معاملہ عام نہیں ہے، بہت خطرناک ہے، ہر پراڈکٹس گھر میں جاتی ہیں، حرام ہیں یا حلال کوئی میکنزم ہی نہیں۔

عدالت نے کسٹم حکام پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا ہم کیا کھا رہے ہیں کچھ معلوم نہیں، اس حوالے سے عدالت واضح احکامات جاری کرے گی۔

بعد ازاں لاہور ہائی کورٹ میں حرام اجزا ملی کھانے پینے کی اشیا کی فروخت کیخلاف درخواست پر سماعت 20جون تک ملتوی کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں