The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کے بھتیجے کی درخواستِ ضمانت پر نیب کو نوٹس ، جواب طلب

لاہور: لاہور ہائی کورٹ نے چوہدری شوگر مل کیس میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کے بھتیجے یوسف عباس کی درخواست ضمانت پر نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 16 دسمبر کو جواب طلب کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے چوہدری شوگر مل کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے بھتیجے یوسف عباس کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔

یوسف عباس کے وکیل نے دلائل میں کہا کہ شریف فیملی ایک کاروباری خاندان ہے اور قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتا ہے، نیب نے چوہدری شوگر مل منی لانڈرنگ انکوائری میں گرفتار کیا جبکہ چوہدری شوگر مل سمیت شریف فیملی کے دیگر بزنسز پر پانامہ جی آئی ٹی نے رپورٹ سپریم کورٹ پیش کی ، جس میں کوئی ثبوت نہیں ملا۔

یوسف عباس کے وکیل کا کہنا تھا کہ نیب کی حراست میں 48 دن جسمانی ریمانڈ پر رہے لیکن شواہد پیش نہیں کیے گیے ، نیب نے 410 ملین کیمنی لانڈرنگ کا الزام لگایا جبکہ اس کا تمام ریکارڈ موجود ہے اور تمام رقم بینکنگ چینل سے پاکستان آئی اور اس ہر ٹیکس بھی دیا۔

مزید پڑھیں : نوازشریف کے بھتیجے نے ہائی کورٹ میں درخواست ضمانت دائر کر دی

وکیل کا کہنا تھا کہ نیب نے بے بنیاد الزامات لگائے لہذا عدالت درخواست ضمانت منظور کرتے ہوئے رہا کرنے کا حکم دے ، جس پر عدالت نے نوٹس جاری کرتے ہوئے نیب سے 16 دسمبر کو جواب طلب کر لیا،درخواست میں چیرمین نیب، ڈی جی نیب کو فریق بنایا گیا ہے۔

یاد رہے کہ 22 نومبر کو احتساب عدالت نے چوہدری شوگر ملز کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو حاضری سے استثنیٰ دیتے ہوئے نیب پراسیکیوٹر کو ریفرنس جلد دائر کرنے کا حکم دیا تھا۔

خیال رہے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز چوہدری شوگرملزکیس میں ضمانت پر ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں