The news is by your side.

Advertisement

توہین عدالت کیس، نواز شریف سمیت 14 مسلم لیگی رہنماؤں کو نوٹس جاری

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے توہین عدالت کی درخواست پر نواز شریف اور مسلم لیگ ن کے 14 رہنماؤں سمیت فریقین کو نوٹس جاری کر دیئے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس مامون الرشید شیخ نے سول سوسائٹی کی آمنہ ملک کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل اظہر صدیق ایڈوکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ نواز شریف، خواجہ آصف، خواجہ سعد رفیق، رانا ثناءاللہ اور دیگر رہنماؤں نے اسلام آباد سے لاہور تک ریلی میں مسلسل عدلیہ اور فوج پر تنقید کی جو آئین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

وکیل نے دلائل میں کہا کہ نواز شریف اور مسلم لیگ ن کے رہنماؤں نے ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت ملکی سلامتی کے اداروں کے خلاف پروپیگنڈہ کیا، ان کے یہ بیانات بغاوت کے زمرے میں آتے ہیں۔

عدالت نے استفسار کیا کہ یہ بیانات کس طرح بغاوت کے زمرے میں آتے ہیں، کیا ان کے خلاف درخواست گزار نے پیمرا سے رجوع کیا۔


مزید پڑھیں :  عدلیہ مخالف بیان ، نواز شریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر


درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ انہوں نے چیئرمین پیمرا اور سپیکر قومی اسمبلی کو بار بار درخواستیں دیں مگر کارروائی نہیں کی گئی، یہ عدلیہ پر حملہ ہےجسےکوئی شہری برداشت نہیں کرسکتا ، عدلیہ نے ہی آئین پر عمل درآمد کراناہے۔

عدالت نے درخواست کی ابتدائی سماعت کے لیے میاں نواز شریف، خواجہ آصف، خواجہ سعد رفیق، رانا ثناءاللہ، دانیال عزیز سمیت فریقین کو پچیس اگست کے لیے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ہے۔

یاد رہے کہ آمنہ ملک کی جانب دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف نے جلسوں میں کھلے عام عدلیہ پر حملے کئے ججوں کے حوالے سے کہا کہ ججز نے ووٹ کی پرچی پھاڑ دی۔

درخواست میں استدعا کی گئی کہ نوازشریف نے جہلم، گوجرانوالہ اور لاہور میں ملکی اعلی عدالتوں پر تنقید کی، نواز شریف اور ان کے ساتھیوں کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں