عدالت نے ’قومی پرچم‘ سے متعلق پالیسی بنانے کا حکم دے دیا -
The news is by your side.

Advertisement

عدالت نے ’قومی پرچم‘ سے متعلق پالیسی بنانے کا حکم دے دیا

لاہور :ہائی کورٹ نے وفاقی حکومت کوقومی پرچم کی حرمت کو یقینی بنانے اور قومی پرچم پر سیاسی شخصیات کی تصاویر چھاپنے اور مختلف رنگوں کے قومی پرچموں کی چھپائی سے متعلق 3 ماہ میں پالیسی وضع کرنے کی ہدایت کر دی۔

تفصیلات کےمطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شاہد بلال حسن نے کیس کی سماعت کی۔ درخواست گزار طلحہ سیف نے عدالت کو بتایا کہ قومی پرچم اور جھنڈیوں پر سیاسی شخصیات کی تصاویر چھاپی جا رہی ہیں جو کہ پرچم کے تقدس کو پامال کرنے کے مترادف ہےجبکہ مارکیٹ میں مخلتف رنگوں کے قومی پرچم فروخت کے جا رہے ہیں جس سے اصل قومی پرچم کی شناخت متاثر ہو رہی ہے ۔

درخواست گزار کے مطابق جشن آزادی کے موقع پر ملک بھر میں جھنڈیاں لگائی جاتی ہیں جو بعد میں گلی کوچوں میں گری دکھائی دیتی ہیں جو کہ قومی پرچم کی بے حرمتی ہے ۔

قومی پرچم کی حفاظت ہم سب کی قومی ذمہ داری ہے*

اس حوالے سے عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پرچم کے تقدس کی پامالی پر عدالت کو بھی تحفظات ہیں لیکن چودہ اگست کے موقع پر یوم آزادی کی تقریبات سے قبل عدالت ایسا کوئی حکم جاری نہیں کرے گی، جس پر عمل نہ کیا جا سکے۔

عدالت نے وفاقی وزارت داخلہ کو قومی پرچم کی حرمت کو یقینی بنانے کے لئے تین ماہ میں پالیسی تشکیل دینے کا حکم دے دیا جبکہ قومی پرچم پر سیاسی شخصیات کی تصاویر چھاپنے اور مختلف رنگوں کے قومی پرچموں کی چھپائی سے متعلق بھی پالیسی وضع کرنے کی ہدایت کر دی۔

عدالت نےوفاقی وزارت داخلہ کو درخواست پر تین ماہ میں فیصلہ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے پٹیشن نمٹا دی اور درخواست گزار کو ہدایت کی کہ وہ فوری طور پر وزارتِ داخلہ سے رجوع کرے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں