The news is by your side.

Advertisement

معاونین و مشیران کی تقرری کیخلاف درخواست، بابر اعوان کیخلاف یکطرفہ کارروائی ختم کرنے کا حکم

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے وزیر اعظم کے مشیروں اور معاونین خصوصی کے تقرر کیخلاف درخواست پر بابر اعوان کے خلاف یکطرفہ کارروائی ختم کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان نے بابر اعوان کی متفرق درخواست پر سماعت کی، عدالت نے بابر اعوان کیخلاف یکطرفہ کارروائی ختم کرنے کا حکم دے دیا اور انہیں جواب داخل کرانے کیلئے مہلت دے دی۔

عدالت نے جواب جمع نہ کروانے پر ڈاکٹر بابر اعوان کے خلاف یکطرفہ کارواٸی شروع کی تھی، درخواست گزار کی جانب سے وزیراعظم کے مشیروں کی تقرری چیلنج کی گٸی ہے۔

موقف اختیار کیا کہ غیر منتخب افراد کو مشیر تعینات نہیں کیا جا سکتا، آٸین کے مطابق صرف منتخب افراد کو ہی معاون خصوصی تعینات کیا جا سکتا ہے لہذا عدالت غیر منتخب مشیروں کو کام سے روکنے کا حکم دے۔

یاد رہے ستمبر میں وزیر اعظم عمران خان نے 16 معاونین کی تقرریوں کے خلاف درخواست پر جواب عدالت میں جمع کرایا تھا ، جس میں کہا تھا آئین کے آرٹیکل 93 کے تحت 5 معاون خصوصی رکھ سکتا ہوں۔

جواب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ قانون یہ بھی اختیار دیتا ہے کہ معاونین کی تنخواہیں اور الاونسز مقرر کر سکوں، تمام معاونین خصوصی اور مشیران خاص کی تقرریاں آئین اور قانون کے مطابق ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں