The news is by your side.

Advertisement

چوہدری نثار مشکل میں پھنس گئے

لاہور: لاہور ہائی کورٹ نے سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کے پنجاب اسمبلی کی رکنیت کا حلف نہ اٹھانے کیخلاف درخواست پر الیکشن کمیشن اور چوہدری نثار کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شاہد وحید نے مقامی وکیل ندیم سرور کی سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کے پنجاب اسمبلی کی رکنیت کا حلف نہ اٹھانے کیخلاف درخواست پر سماعت کی۔

وکیل نے اعتراض اٹھایا کہ چوہدری نثار علی نے کامیاب ہونے کے باوجود اسمبلی کا حلف نہیں اٹھایا۔

درخواست گزار کے مطابق چوہدری نثار کے حلف نہ اٹھانے سے اُن کے حلقے کے عوام نمائندگی سے محروم ہوئے اور حلف نہ اٹھانا ووٹرز کی توہین ہے جبکہ چوہدری نثار کا حلف نہ لینا آئین کی خلاف ورزی ہے۔

درخواست گزار نے استدعا کی کہ حلف نہ اٹھانے پر الیکشن کمیشن کو چوہدری نثار کو ڈی نوٹیفائی کرنے کا حکم دیا جائے۔

عدالت نے سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کے پنجاب اسمبلی کی رکنیت کا حلف نہ اٹھانے کیخلاف درخواست پر الیکشن کمیشن اور چوہدری نثار کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

خیال رہے چوہدری نثار میاں نواز شریف سے اختلافات کے باعث الیکشن سے قبل پارٹی سے الگ ہوگئے تھے اور جیپ کے نشان پر قومی اور صوبائی اسمبلی کی دو دو نشستوں سے الیکشن میں‌ اترے لیکن انھیں ناکامی کا سامنا کرنا پڑاتھا۔

چوہدری نثار پی پی 10 راولپنڈی سے رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے، لیکن طبیعت خراب ہونے کی وجہ سے بیرون ملک چلے گئے تھے، جس کی باعث وہ حلف نہ اٹھا سکے تھے۔

بعد ازاں چوہدری نثار نے الیکشن 2018 میں ناکامی کے بعد اعلان کیا تھا کہ اُن کا کسی سیاسی جماعت میں شامل ہونے کا ارادہ نہیں، احتساب اورانتقام میں فرق ہونا چاہیے، ملک شدید محاذ آرائی کی طرف بڑھ رہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں