ٹریفک وارڈنز پر صحافیوں سمیت شہریوں کی ویڈیوز اور تصاویر بنانے پر پابندی عائد
The news is by your side.

Advertisement

ٹریفک وارڈنز پر صحافیوں سمیت شہریوں کی ویڈیوز اور تصاویر بنانے پر پابندی عائد

لاہور: لاہور ہائی کورٹ کا وارڈنز کی جانب سے صحافیوں سے بدتمیزی اور ان کی ویڈیوز بنانے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے صحافیوں سمیت دیگر شہریوں کی ویڈیوز اور تصاویر بنانے پر پابندی عائد کردی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ نے وارڈنز کی جانب سے صحافیوں سے بدتمیزی اور ان کی ویڈیوز بنانے کا سخت نوٹس لیا ہے اور وارڈنز کی جانب سے صحافیوں سمیت دیگر شہریوں کی ویڈیوز اور تصاویر بنانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔

جسٹس علی اکبر قریشی نے چیف ٹریفک پولیس آفیسر کیپٹن لیاقت کو کل طلب کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ وارڈنز کا کام صرف چالان کرنا ہے، بدتمیزی کرنا اور ویڈیو بنانا نہیں۔

عدالت نے ٹریفک پولیس پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور استفسار کیا کہ کس قانون کے تحت وارڈن نے صحافیوں کی ویڈیوز بنائیں۔

عدالت نے قرار دیا کہ وارڈنز کی فوج ظفر موج سڑکوں پر کھڑی خوش گپیوں میں مصروف رہتی ہے، صحافی ہو یا کوئی شہری، کسی کی تذلیل برداشت نہیں کی جائے گی۔ وارڈنز کا کام صرف چالان کرنا ہے، اس کے علاوہ ان کے پاس کوئی اختیار نہیں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں