The news is by your side.

Advertisement

‘کورونا کی تیسری لہر بہت زیادہ خطرناک ، وائرس کی ایک نئی شکل میں علامات کے بغیر موت ہوجاتی ہے’

کوئٹہ: ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی کا کہنا ہے کہ کورونا کی تیسری لہر بہت زیادہ خطرناک ہے، وائرس کی ایک نئی شکل میں علامات کے بغیر موت ہوجاتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبےمیں کوروناکیسز اور اموات میں اضافہ ہورہا ہے، کورونا کی تیسری لہر بہت زیادہ خطرناک ہے، صورتحال دیکھتے ہوئے بحالت مجبوری لاک ڈاون کا فیصلہ کیا، وائرس کی ایک نئی شکل میں علامات کے بغیر موت ہوجاتی ہے۔

لیاقت شاہوانی کا کہنا تھا کہ حالات مزید خراب ہوئے تو مشکلات میں مزید اضافہ ہوگا، عوام کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ انہوں نے حکومت کا ساتھ دیا, کچھ لوگ اپنی زندگی سے زیادہ شاپنگ کو اہمیت دیتے ہیں، تاجر برادری بھی زندگی سے زیادہ کاروبار کو اہمیت دے رہے ہیں۔

ترجمان حکومت بلوچستان نے کہا کہ یکم مئی کوبلوچستان میں کورونا کے 22فیصد کیس رپورٹ ہوئے، سختی کرنے کے بعدکیسز میں کمی آئی، حکومت اور این سی او سی ماہرین کی تجاویز پرفیصلےکررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ عید سادگی سے منائی جائے، شہری عید نماز کے اجتماعات میں احتیاط برتیں۔

لیاقت شاہوانی نے کہا کہ 17ہزار سے زائدہیلتھ کیئرورکرزکوویکسین کی پہلی خوراک دی جاچکی ہے، فاطمہ جناح اسپتال کے تمام بیڈز بھر چکے ہیں، کوئٹہ کے تمام اسپتالوں میں 58 فیصد بیڈ بھر چکے ہیں۔

لاک ڈاؤن کے حوالے سے ترجمان نے کہا کہ 16 مئی تک لاک ڈاؤن برقرار رہے گا،ل شہریوں سے اپیل ہے کہ گھروں میں رہے، کورونا کی وجہ سے اموات میں اضافہ ہورہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں