The news is by your side.

Advertisement

Liechtenstein: یورپ کا چھوٹا سا سرسبز و شاداب ملک (سیر و سیاحت)

لیختینستائن (Liechtenstein) یورپ میں سوئٹزر لینڈ اور آسٹریا کے درمیان واقع ایک چھوٹا سا ملک ہے جس کا دارالحکومت ویڈز (Vaduz) ہے۔ یہاں کی دفتری زبان جرمن ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ پانچ ہزار قبلِ مسیح میں بھی یہاں انسانی تہذیب موجود تھی۔

آج لیختینستائن کا کُل رقبہ 62 مربع میل یا 160 مربع کلو میٹر سے بھی کم ہے جب کہ آبادی 38 ہزار سے کچھ زائد نفوس پر مشتمل ہے۔ یہ ملک پہاڑی علاقے پر مشتمل ہے اور قابلِ تجارت قدرتی وسائل سے محروم ہے بلکہ پہاڑی اور سخت پتھریلی زمین کے باعث یہاں کاشت کاری بھی ممکن نہیں اور لکڑی تک باہر سے درآمد کی جاتی ہے۔ اس کے باوجود یہ ایک خوشحال ملک ہے جس کی بڑی وجہ سیاحت ہے جو یہاں کی سب سے بڑی صنعت ہے۔

لیختینستائن میں شرحِ خواندگی مردوں عورتوں میں سو فی صد ہے۔ کم آبادی والے اس ملک میں امن و امان قائم رکھنے اور تنازعات یا لوگوں کے جھگڑے نمٹانے کے لیے مختصر سی پولیس موجود ہے جب کہ اس کی سرحدوں کا دفاع سوئزر لینڈ نے اپنے ذمہ لیا ہے۔

سرکاری مذہب عیسائیت (رومن کیتھولک) ہے جب کہ آئین میں دیگر مذاہب کو بھی تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔ یہاں‌ کچھ فی صد مسلمان بھی بستے ہیں جن کی اکثریت غیرمقامی ہے۔ یہاں بارش اور برف باری بہت ہوتی ہے اور تقریباََ سارا سال بادل چھائے رہتے ہیں۔

قدیم تاریخ دیکھی جائے تو معلوم ہو گاکہ یہ خطّہ رومی سلطنت کے صوبے ”ریتیا“ کا حصّہ رہا ہے، لیکن سولھویں صدی میں یہاں روس اور فرانس کی افواج قابض رہی ہیں۔ بعد میں یہ ملک جرمن یونین کا حصّہ بن گیا۔ پہلی جنگِ عظیم کے بعد اسے آزادی نصیب ہوئی۔ یہاں‌ کئی قلعے اور محلّات ہیں‌ جو قدیم دور کی یادگار ہیں اور یورپی طرزِ تعمیر کا خوب صورت شاہ کار بھی۔

یورپ کی خوب صورتی اور سبزہ و شادابی کے ساتھ تعمیرات بھی مشہور ہیں جب کہ انتظامی امور میں بھی یورپی ممالک پاکستان جیسے ملکوں میں ایک مثال سمجھے جاتے ہیں اور یہ بھی ایسا ہی چھوٹا سا ملک ہے جس میں سڑکوں کا بہت عمدہ نظام اور ریلوے موجود ہے۔ لیکن یہاں صرف زمینی راستے سے پہنچا جاسکتا ہے اور یہاں کوئی ہوائی اڈا نہیں ہے۔

19 مارچ اس ملک کے قومی دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔

(تلخیص و ترجمہ: منہاج الدّین)

Comments

یہ بھی پڑھیں