The news is by your side.

Advertisement

گھوسٹ ملازمین پکڑے جانے سے حکومتی خزانے کو کروڑوں کی بچت

لاہور: سرکاری خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے والے محکمہ صحت کے گھوسٹ ملازمین پکڑ میں آ گئے، 13 ایسے ملازمین بھی پکڑے گئے جو دنیا ہی میں موجود نہیں۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ صحت پنجاب میں سرکاری خزانے کو 65 ملین روپے کا نقصان پہنچانے والے ملازمین پکڑے گئے ہیں، تمام گھوسٹ ملازمین کی لسٹ اے آر وائی نیوز نے حاصل کر لی۔

فہرست کے مطابق محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر نے 1525 گھوسٹ ملازمین کی نشان دہی کی ہے، جب کہ 213 گھوسٹ ملازمین کی تنخواہ روک دی گئی ہے۔

سیکریٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کئیر محمد عثمان کا کہنا ہے کہ گھوسٹ ملازمین کی نشان دہی سے 65 ملین روپے کی بچت ہوگی، گھوسٹ ملازمین سے رقم واپس لے کر صحت کے شعبے میں استعمال ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ 213 گھوسٹ ملازمین میں 159 نامعلوم، 27 ریٹائرڈ، اور 13 فوت شدگان ملازمین شامل ہیں۔ 9 لمبی چھٹی، 2 ڈیپوٹیشن، 3 برطرف ملازمین بھی تنخواہ وصول کرتے رہے، 25 ڈبل تنخواہ وصول کرنے والے ملازمین کے خلاف انکوئری کا آغاز کر دیا گیا۔

سیکریٹری ہیلتھ کے مطابق 1312 ملازمین بائیو میٹرک سسٹم میں غیر رجسٹرڈ ہیں، جن کی تصدیق کی جاری ہے، گھوسٹ ملازمین کی تعداد میں اضافے کا بھی خدشہ ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں