The news is by your side.

سعودی عرب: ننھی بچی کو جگر کا عطیہ کیسے ملا؟

ریاض: سعودی عرب میں جگر کے عطیے کی ضرورت مند بچی کے لیے ایک انجان خاتون آگے آگئیں، خاتون نے انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر انجانی بچی کو اپنے جگر کا ایک حصہ عطیہ کردیا۔

اردو نیوز کے مطابق سعودی خاتون اور سوشل میڈیا سٹار جوہرہ الحقیل نے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر ایک انجانی بچی جومانا الحربی کو اپنے جگر کا ایک حصہ عطیہ کیا ہے۔

جوہرہ الحقیل کا کہنا تھا کہ میری ایک سہیلی نے بتایا تھا کہ ایک بچی کو جگر کے عطیے کی ضرورت ہے اور وہ تکلیف میں ہے، جگر کا ٹرانسپلانٹ ہی اس کی زندگی بچا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں بچی کو بھی نہیں جانتی تھی اور نہ اس کے اہل خانہ سے کوئی شناسائی تھی مگر جب یہ علم ہوا کہ بچی کی زندگی بچ سکتی ہے تو اپنے جگر کا ایک حصہ عطیہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

ان کے مطابق انہیں اپنی آنکھوں کی سرجری کا مسئلہ درپیش تھا تاہم اپنی سرجری کو بھول کر انہوں نے بچی کی مدد کا فیصلہ کیا۔

سعودی خاتون کا کہنا تھا کہ اللہ نے میرے دل میں ڈالا کہ معاشرے میں کارخیر کر کے اپنی ایک پہچان بناؤں، مجھے بچپن سے رضا کارانہ کاموں کا شوق رہا ہے، سعودی عرب میں غربت کے انسداد میں سرگرم ٹیم کا حصہ بننے کی بھی خواہش ہے۔

خیال رہے کہ جوہرہ الحقیل سعودی سوشل میڈیا سٹار ہیں اور ضرورت مندوں کو اعضا عطیہ کرنے کی مہم بھی چلا رہی ہیں، انجانی بچی کو جگر عطیہ کیے جانے کو سوشل میڈیا صارفین بھی سراہ رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں