site
stats
پاکستان

کراچی والے بدستور اندھیروں میں سحری کرنے پر مجبور

کراچی: صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں رمضان کے آغاز کے ساتھ ہی شروع ہونے والے بجلی کے بدترین بحران پر تاحال قابو نہیں پایا جا سکا۔ دوسری سحری میں بھی کئی علاقے اندھیرے میں ڈوبے رہے۔

تفصیلات کے مطابق شدید گرمی، رمضان المبارک اور کے الیکٹرک کی نا اہلی کے باعث بدترین لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کو امتحان میں ڈال دیا۔

کراچی میں کے الیکٹرک کی ہٹ دھرمی کا نوٹس لینے والا کوئی نہیں۔ دوسری سحری میں بھی کئی علاقے اندھیرے میں ڈوبے رہے۔

مزید پڑھیں: کراچی میں بجلی کا طویل بریک ڈاؤن

ملیر اور گلشن اقبال کے متعدد علاقوں میں بجلی غائب رہی۔ ایف بی ایریا، ناظم آباد اور لیاقت آباد بھی اندھیرے ڈوبے رہے۔ صدر اور لیاری کے علاقوں میں بجلی کی آنکھ مچولی نے شہریوں کو نڈھال کردیا۔

کورنگی، کلفٹن، محمود آباد اور گزری میں بھی بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔

شہر بھر میں بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ کے باعث پانی کی بھی شدید قلت ہوگئی ہے۔ شہریوں کا مطالبہ ہے کہ حکومت کراچی میں بدترین لوڈ شیڈنگ کا نوٹس لے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top