کراچی میں رواں ماہ کا چوتھا بڑا بریک ڈاؤن -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی میں رواں ماہ کا چوتھا بڑا بریک ڈاؤن

کراچی: کے الیکٹرک کی بدترین کارکردگی عروج پرہے‘ روشنیوں کاشہرکراچی ایک مرتبہ پھراندھیرے میں ڈوب گیا‘ کمپنی انتظامیہ نے سسٹم میں فنی خرابی کو بریک ڈاون کاسبب بنایا۔

تفصیلات کے مطابق کے الیکٹرک کی غفلت کے سبب گزشتہ روز بھی آدھاشہراندھیرے میں ڈوب گیاتھا۔ گلستان جوہر،صفورا گوٹھ، لیاقت آباد، ملیر، ناظم آباد اورگلشن اقبال میں کئی گھنٹے بجلی غائب رہی۔

علاوہ ازیں شادمان ٹاؤن اورنیوکراچی کےعلاقوں میں بجلی کی فراہمی کئی گھنٹے تک معطل رہی جبکہ شاہ فیصل گرڈاسٹیشن میں پیداہونےوالی فنی خرابی کوپندرہ گھنٹےبعد بھی دورنہیں کیاجا سکا۔

کے الیکٹرک انتظامیہ نے ہمیشہ کی طرح اس باربھی سارا ملبہ تکنیکی خرابی پرڈال دیا‘ ان کا موقف تھا کہ فالٹ دور کیا جارہا ہے اور جلد ہی صورتحال پر قابو پا لیا جائے گا۔ حقائق کے برعکس ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ معمول سے ہٹ کر کہیں لوڈ شیڈنگ نہیں کی جارہی۔

خیال رہے کہ بریک ڈاؤن کے ساتھ ساتھ شہرکےمختلف علاقوں میں غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کادورانیہ بڑھتاہی جارہاہے اورصورتِ حال تاحال کسی بھی قسم کی بہتری کی جانب گامزن نظر نہیں آرہی۔


کے الیکٹرک کے خلاف جماعت اسلامی کا دھرنا ختم


 یاد رہےکہ رواں ماہ کے اوائل میں جماعت اسلامی نے کے الیکٹرک کی من مانیوں کے خلاف گورنرہاؤس پر 4 روزہ احتجاجی دھرنا دیا تھا جس کے بعد گورنر سندھ نے کے الیکٹرک انتظامیہ سے معاملات طے کرنے اور مسائل کے حل کی یقین دہانی کرائی تھی۔

اس موقع پر جماعت کے امیر کراچی حافظ نعیم الرحمٰن کا کہنا تھا کہ اگر شکایات کا ازالہ نہ ہوا اور 15 دن میں مطالبات تسلیم نہ کیے گئے تو 17 مئی کو دوبارہ گورنر ہاؤس کا رخ کریں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں