The news is by your side.

Advertisement

سستے مکانات کیلیے قرض، اسٹیٹ بینک کی اہم ہدایات جاری

سستے مکانات کے لیے بینک قرضوں کی فراہمی کے حوالے سے اسٹیٹ بینک نے حکومت کے ‏فیصلے پر عملدرآمد کے لیے بینکوں کو ہدایات جاری کر دیں۔

حکومتِ پاکستان نے پست سے متوسط سطح تک آمدنی کے گروپوں میں کم لاگت اور سستے ‏مکان کی ملکیت کو فروغ دینے کی اپنی کوششوں کے سلسلے میں ہاؤسنگ فنانس کی مارک اپ ‏سبسڈی اسکیم پر بڑے پیمانے پر نظرِ ثانی کی ہے تاکہ ہاؤسنگ مارکیٹ کی موجودہ حرکیات کے ‏ساتھ مطابقت لائی جائے۔

توقع ہے کہ نظرِ ثانی شدہ اسکیم ہاؤسنگ فنانس تک بڑی تعداد میں موجود اْن گھرانوں کی رسائی ‏کو خاصی آسان بنا دے گی جو فی الحال ذاتی مکان کے مالک نہیں ہیں۔

گذشتہ سال اکتوبر میں حکومتِ پاکستان نے تعمیراتی شعبے اور نئے مکانات کی خریداری کے لیے ‏مارک اپ سبسڈی کی سہولت فراہم کرنے کا آغاز کیا تھا تاکہ پہلی بار مکان خریدنے والوں کو ‏رعایتی اور قابلِ برداشت مارک اپ ریٹس پر ہاؤسنگ فنانس فراہم کی جائے۔ یہ سہولت ”نیا پاکستان ‏ہاؤسنگ اینڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی“ (نیفڈا) کے انتظامات کے ساتھ فراہم کی جا رہی ہے جس پر بینک ‏دولت پاکستان بینکوں کے ذریعے عمل درآمد کر رہا ہے۔

اس اسکیم کا دائرہ کار بڑھانے کے لیے اور مزید گھرانوں کو اس سے مستفید کرانے کے لیے، ‏حکومتِ پاکستان نے اسٹیک ہولڈرز کی سفارش پر اسکیم کے اہم پیمانوں میں نمایاں تبدیلیوں کی ‏منظوری دی ہے۔ نظرِ ثانی شدہ اسکیم کا سرکلر اسٹیٹ بینک کی جانب سے بینکوں کو جاری کر دیا ‏گیا ہے۔

اسکیم نے ممکنہ قرض لینے والوں کو تین سطحوں میں تقسیم کیا تھا۔ اب ایک نئی سطح ’سطح ‏صفر‘ (‏Tier 0‎‏) اسکیم میں ڈالی گئی ہے تاکہ اسکیم کے تحت مائکرو فنانس بینکوں کی شمولیت ‏کو آسان بنایا جائے اور فی مکاناتی یونٹ 2 ملین روپے تک کا قرضہ جاری کیا جائے۔
حقیقت یہ ہے کہ مائکرو فنانس بینک پست ا?مدنی والے گھرانوں کو قرضہ دینے میں خصوصی ‏مہارت رکھتے ہیں چنانچہ اس کے پیشِ نظر یہ رائے بنی ہے کہ مائکرو فنانس بینکوں کی شمولیت ‏سے اس اسکیم کی رسائی اِن گروپوں تک خاصی بڑھ جائے گی۔
اس سطح کے تحت، مائکرو فنانس بینک یا تو اپنی رقوم استعمال کریں گے یا پھر بینک مائکرو ‏فنانس بینکوں کو قرضہ دیں گے جو یہ قرضہ ہاؤسنگ فنانس کے پست آمدنی والے درخواست ‏گزاروں کو دیں گے۔ سطح اول (نیفڈا کے منصوبوں کے تحت 5 مرلہ تک اور850 مربع فٹ کورڈ ‏رقبے والے ہاو?سنگ یونٹ) کے تحت حتمی صارف کا رعایتی مارک اپ ریٹ کم کر کے ‏ابتدائی5برسوں کے لیے3فیصد اور اگلے5برسوں کے لیے5فیصد کر دیا گیا ہے۔

اپارٹمنٹ کے لیے ہے جن کا کورڈ ایریا 2,000 مربع فٹ تک ہو۔ مزید برآں ، اسکیم کے تحت ‏ہاؤسنگ فنانس کی موجودہ کم سے کم مدت کو 10 سال سے کم کرکے 5 سال کردیا گیا ہے۔ اس ‏سے ان افراد کو مدد ملے گی جو قلیل مدتی قرضے چاہتے ہیں۔ نظرثانی شدہ مارک اپ سبسڈی ‏کی سہولت ملک بھر کے بینکوں کے ذریعے دستیاب رہے گی۔اسکیم کے بنیادی پیمانوں میں ‏تبدیلی کے ساتھ ساتھ ، حکومت پاکستان نے 10 سالہ فنانسنگ کے حوالے سے مارک اپ سبسڈی ‏ادائیگی کے لیے مختص مجموعی فنڈنگ بڑھا کر 36 ارب روپے کردی ہے اور اس سہولت کو جاری ‏رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں