The news is by your side.

Advertisement

لائن آف کنٹرول: بھارتی فورسز کی فائرنگ میں کمی، وقفے وقفے سے دراندازی کا سلسلہ جاری، آئی ایس پی آر

راولپنڈی: پاک فوج کے ترجمان نے کہا ہے کہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران لائن آف کنٹرول پر بھارتی فورسز کی فائرنگ کی شدت میں کمی آئی تاہم مختلف سیکٹروں میں وقفے وقفے سے سلسلہ جاری ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ (آئی ایس پی آر) سے جاری بیان میں لائن آف کنٹرول کی صورتحال سے آگاہ کیا گیا ہے، ترجمان کے مطابق  یکم اور2مارچ  کے بعد سرحد پر بھارتی فورسزکی فائرنگ کی شدت میں کمی آئی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق گزشتہ شب فائرنگ کاسلسلہ مختلف سیکٹرزپروقفےوقفےسےجاری رہا جن میں نیزہ پیر،جندروٹ، باغ شامل ہیں، پاک فوج نے تمام سیکٹروں پر بھارتی دراندازی کا مؤثر اور بھرپور جواب دیا۔

شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق پاک فوج نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرنے والی بھارتی چیک پوسٹوں کونشانہ بنایا، گزشتہ 24 گھنٹے میں پاکستان کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل کا کہنا تھا کہ مسلح افواج مکمل طورپر الرٹ اور چوکنا ہیں اور وہ دراندازی کا بھرپور جواب دے گی۔

دوسری جانب ایک روز قبل لائن آف کنٹرول پر بھارتی فائرنگ سے شہید ہونے والے پاک فوج کے شہید حوالدار عبدالرب کی تدفین فوجی اعزاز کے ساتھ ڈیرہ اسماعیل خان میں کردی گئی جبکہ دوسرے شہید ہونے والے اہلکار نائیک خرم کی نماز جنازہ ڈیرہ غازی خان میں ادا کی جائے گی۔

پاک فوج کے دونوں جوان لائن آف کنٹرول پر واقع نکیال سیکٹر پر بھارتی فائرنگ سے شہید ہوئے تھے۔ حوالدار عبدالرب کے  نماز جنازہ میں پاک فوج کے افسران، ضلعی انتظامیہ سمیت شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز پاکستان کی جانب سے امن کے پیغام کے بعد بھی بھارت نے جنگی جنون کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایل اوسی پرفائرنگ وگولہ باری کی تھی جس کے نتیجے میں پاک فوج کے 2 جوان سمیت دو پاکستانی شہری شہید ہوگئے تھے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق شہید ہونے والے دونوں جوان شہری آبادی پرفائرنگ کے جواب میں بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنا رہے تھے۔

واضح رہے 27 فروری کو پاک فضائیہ نے سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے 2 بھارتی طیارے مار گرائے تھے اور ایک بھارتی پائلٹ کو گرفتار کرلیا تھا۔

آئی ایس پی آر کے سربراہ میجر جنرل آصف غفور کے مطابق بھارت کے 2 طیارے لائن آف کنٹرول کے اطراف میں گر کر تباہ ہوئے، ایک طیارہ بھارتی مقبوضہ کشمیر کے علاقے بڈگام میں گرا، جبکہ دوسرا طیارہ پاکستان کی جانب گرا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں