The news is by your side.

Advertisement

مقامی ہوٹل میں آتشزدگی کے متعلق تحقیقات کے دوران اہم انکشافات

کراچی: مقامی ہوٹل میں آتشزدگی کی تحقیقات کے دوران اہم انکشافات سامنے آگئے، تفتیشی پولیس افسر نے کیس چالان عدالت میں جمع کرادیا گیا ہے.

تفصیلات کے مطابق مقامی ہوٹل میں آگ کی تحقیقات کے دوران اہم انکشافات سامنےآ ئے ہیں، سول ڈیفنس کےجودستاویزات دیےگئے، وہ اپریل 2016 کے ہیں، ہوٹل انتظامیہ کی فراہم سول ڈیفنس دستاویزات کا ریکارڈ نہیں ہے.

تحقیقاتی کاروائی میں یہ بھی انکشاف ہوا کہ آگ لگنے کے وقت ہوٹل کےکنٹرول روم میں صرف آپریٹربیٹھا ہوا تھا، جبکہ سی سی ٹی وی آپریٹر فائرسیفٹی سے لاعلم تھا.

تفتیشی پولیس افسر کا کہنا ہے کہ سول ڈیفنس ادارے نے دستاویز کی تصدیق نہیں کی تھی، آگ کےبعد15پرہوٹل سےمہمان نے3بجکر10منٹ پرکال کی تھی.

عامرالطاف کا کہنا ہے کہ آدھے گھنٹے تک ہوٹل ملازمین خودآگ پرقابوپانےکی کوشش کرتے رہے، اےسی بند نہ ہونے کی وجہ سے دھواں پھیلا.

مزید پڑھیں :کراچی: نجی ہوٹل میں آتشزدگی، پولیس کی باریک بینی سے تفتیش

واضح رہے کہ مقامی ہوٹل میں آگ سے متعلق پولیس نےچالان عدالت میں جمع کرادیا گیا ہے ، جس میں شفٹ انچارج پرویزاورسیکیورٹی انچارج بھی چالان میں نامزد ہیں ، اس ناخوشگوار واقعے میں 12 افرادجاں بحق اور49زخمی ہوئےتھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں