The news is by your side.

Advertisement

ریلوے انجن اپ گریڈ کرنے کے لیے امریکی کمپنی اسپیئر پارٹس بھجوارہی ہے، شیخ رشید

لاہور: وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی ابھی دورہ امریکہ کی تھکان نہیں اتر ی او روہاں سے فنانشل او رملٹری سپورٹ کا فیصلہ ہو گیا ہے ،25جولائی کو 10جماعتوں نے اکٹھے ہو کر جلسیاں کی ہیں ،میں بتانا چاہتا ہوں کہ عمران خان ان جلسیوں سے نہیں جارہا ۔

تفصیلات کے مطابق شیخ رشید نے ان خیالات کااظہار ریلوے ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا اور کہا کہ ہمارے لئے اصل چیلنج معیشت اور مہنگائی ہے اور مجھے خوف ہے کہ اگر آئندہ ڈیڑھ سے دو ماہ میں مہنگائی کو کم نہ کیا گیا تو عوام ہم سے جواب مانگیں گے ، پہلے ہی کہہ چکا ہوں کہ مریم نواز پورس کی ہتھنی ہیں اور نواز شریف اور مسلم لیگ (ن) کی تباہی کی ذمہ دار صرف اور صرف مریم نواز ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاک فوج اور آرمی چیف کی جتنی سپورٹ وزیر اعظم عمران خان کو حاصل ہے ماضی میں اس کا تصور نہیں تھا ، ایم ایل ون کے معاملے پر سوموار کے روز میٹنگ ہونے جارہی ہے ، امریکن کمپنی ” جی “ یکم اگست کو لوکو موٹیو کے سپیئر پارٹس بھجوارہی ہے ، لاہور اور کراچی میں دو نئی واشنگ لائنز بنانے جارہے ہیں ۔

شیخ رشید نے کہا کہ ریٹائر ہونے والے 100 ڈرائیورز کو ملازمتوں میں توسیع دی جائے گی ،ریلوے افسران کی ایک مہینے کی چھٹیاں منسوخ کر دی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے کے 60لاکھ مسافر بڑھ گئے ہیں اور ہم نے 10ارب روپے زیادہ منافع کمایا ہے ،کم و بیش 5ارب روپے خسارہ کم کیا ہے اس کے باوجود کہ ہمیں ایندھن کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کابوجھ بھی برداشت کرنا پڑا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ دو لو کو موٹیو میں کیمرے لگا دئیے ہیں اور ٹرائل کرنے جارہے ہیں ۔ ریلوے انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ ٹی ایل اے ملازمین کو مستقل کرنے کی سمری منظوری کےلئے فوری بھجوائی جائے اور اس میں واشنگ لائن کے ملازمین کو ترجیح د ی جائے گی ۔ اس کے علاوہ لاہور اور کراچی میں دو نئی واشنگ لائنز بنانے کا بھی کہہ دیا ہے ۔ جن روٹس پر چھتوں پر سفر ہورہا ہے وہاں اضافی کوچز دی جائیں گی ۔

انہوں نے کہا کہ ” جی “ کمپنی سے لو کو موٹیو کی خریداری میں ہنگامی کرپشن اور لوٹ مار کی گئی ، ان کے پاس انجنوں کے پاسپورڈ بھی نہیں ہیں ،کمپنی نے بتایا ہے کہ 9انجنوں کے سپیئر پارٹس یکم اگست تک آرہے ہیں ،20انجنوں کے حوالے سے بھی اور جلد فیصلہ کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ رائل پام کے معاملے پر سی ای او کی سربراہی میں پانچ رکنی کمیٹی بنا دی ہے اور کنسلٹنٹ کا ٹینڈر جلد ہوگا ،ہمارے پاس 90روز ہیں اور ہم نے اس میں پراسس کو مکمل کرناہے ،بین الاقوامی اور مقامی بڑی بڑی کمپنیوں نے اپنی دلچسپی کا اظہار کیا ہے اور ہم لاہور میں اس کلب کے ذریعے بہترین تفریح دیں گے۔

انہوںنے کہا کہ یہاں گالف کھیلنے والوں تعداد 114ہزار تک بتائی گئی لیکن یہ 250سے 300تک ہے اس کے علاوہ 3 سے 4 ہزار ممبران ہیں ، گالفرز کی گاڑیاں خراب ہیں اور میں نے ہدایت کی ہے کہ جو 32گاڑیاں ہیں ان کے پارٹس ایک دوسرے سے تبدیل کر کے کم از کم 10گاڑیاں چلائی جائیں ۔

ایم ایل ون کے بغیر ریلوے میں بہتری نہیں آسکتی اورسوموار کے روز وزیر اعظم کے ساتھ اس کی میٹنگ ہے ، جب تک ایم ایل ون نہیں آئے گا ریلوے میں ولی بھی بٹھا دیں حادثات نہیں رک سکتے۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان نے عزت ، غیر ت اور بلند سوچ کے ساتھ امریکہ کادورہ کیا جو کامیاب رہا اور اس کے مثبت اثرات سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں۔ ابھی وزیر اعظم عمران خان کی دورہ امریکہ کی تھکان نہیں اتری کہ امریکہ سے فنانشل اور ملٹری سپورٹ کا فیصلہ ہو گیا ہے ۔

عمران خان نے کابل میں بھی تاریخی کردار ادا کرنے کی بات کی ہے اور طالبان کودعوت دی جائے گی ۔ اس دور میں سارے میڈیا نے ایک بات کو نظر انداز کیا ہے کہ عمران خان نے امریکی صدر کے سامنے یہ بات کہی کہ ایران سے جنگ بلنڈر ہوگا اور کوئی بھی امریکی صدر کے سامنے یہ بات نہیں کہہ سکتا ۔ عمران خان نے ٹرمپ کے سامنے بیٹھ کر یہ بات کہی کہ اس غلطی سے خطے کا امن تباہ ہو جائے گا۔

برطانیہ میں عمران خان کا ذاتی دوست وزیر اعظم آ چکا ہے ۔ ہمیں صرف مہنگائی اور معیشت کا چیلنج ہے ۔ پاک و ہند کی تاریخ میں 10جماعتوں نے کبھی اتنے ناکام جلسے نہیں کئے ، لاہو رمیں جلسیی کی گئی ، میں عقل کے اندھوں کوبتانا چاہتا ہوں کہ عمران خان ان جلسوںسے نہیں جارہا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے 136ٹرینیں چلا لی ہیں اورجب تک نئی کوچز نہیں آئیں گی نئی ٹرینیں نہیں چلائیں گے ،اب پہلے سے چلنے والی ٹرینوں کی اپ گریڈیشن کریں گے۔

انہوں نے ٹرینوں کی تاخیر کے حوالے سے کہا کہ ایک ماہ کی مہلت دیدیں،بارشوں کی وجہ سے سگنل سسٹم متاثر ہوتا ہے ، ہماری 136میں سے 6ٹرینیں تاخیر کا شکار ہیں لیکن وہ بھی ایک ماہ میں ٹھیک ہو جائیں گی ، اس وقت ہما ری ٹرینیں بمپر ٹو بمپر ہیں اور ہمارے پاس عید کے بعد کیلئے بھی بکنگ نہیں ہے ، میں نے کہا ہے کہ بکنگ آفسز کے عملے کو کسی او رکام میں لگایا جائے ۔

Comments

یہ بھی پڑھیں