The news is by your side.

Advertisement

عمران فاروق کے قتل میں 4500 سے زائد افراد سے تفتیش کی: لندن پولیس

لندن: متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما ڈاکٹرعمران فاروق کی پانچویں برسی کے موقع پرمیٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ ان کے قتل کی تحقیقات جاری ہیں۔

لندن پولیس کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہےکہ عمران فاروق قتل کیس کی تحقیقات میں انتہائی احتیاط سے کام لینے کی ضرورت ہے اورکئی افراد کا تعاون درکارہے۔

یاد رہے کہ ڈاکٹرعمران فاروق کو 16 ستمبر کولندن کے علاقے گرین لینڈ ایج ویئر میں کام سے گھر جاتے ہوئے قتل کیا گیا تھا۔

میٹروپولیٹن پولیس کے مطابق اب تک 4،555 افراد سے اس سلسلے میں پوچھ گچھ کی جاچکی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ متعلقہ افسران پاکستانی حکام سے مسلسل رابطے میں ہیں اور عمران فاروق کے قاتلوں کو کٹہرے میں لانے کےلئے تمام تر ثبوت جمع کئے جارہے ہیں۔

لندن پولیس نے اس سلسلے میں دو افراد کے نام بھی لئے جن میں سے ایک محسن علی 30، اور ایک کاشف خان ، 36ہے اور دونوں افراد ڈاکٹر عمران فاروق کے قتل کے دن یعنی 16 ستمبر 2015 کو لندن میں موجود تھے۔

لندن پولیس نے عوام سے بھی اپیل کی ہے کہ اگرعمران فاروق کے قتل سے متعلق کسی کو کوئی بھی معلومات ہیں تو لندن پولیس سے شیئر کرے۔

لندن پولیس کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ یہ ایک حساس معاملہ ہے اور اس سلسلے میں اطلاعات کو انتہائی سنجیدگی سے ڈیل کیا جائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں