ننھے عبداللہ کو کاغذی کاروائی کے بعد اس کی نانی کے حوالے کر دیا گیا -
The news is by your side.

Advertisement

ننھے عبداللہ کو کاغذی کاروائی کے بعد اس کی نانی کے حوالے کر دیا گیا

کراچی : عدالتی حکم پر ایدھی سینٹر میں مقیم عبداللہ کو کاغذی کاروائی کے بعد اس کی نانی کے حوالے کر دیا گیا، گزشتہ روز عدالت نے ننھے عبداللہ کو نانی کے حوالے کرنے کا حکم دیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق عدالتی حکم پر ننھے عبد اللہ لینے اسکی نانی اور خالہ دستاویز لے کر ایدھی سینٹر پہنچی،جہاں عبداللہ کی سپردگی کے لیے ایدھی انتظامیہ اور عبداللہ کی نانی کے درمیان کاغذی کارروائی مکمل کی گئی، اس طرح دو ماہ پانچ دن کی مدت کے بعد عبداللہ کو اس کی نانی کے حوالے کیا گیا۔

مزید پڑھیں :  عبداللہ حوالگی کیس : عدالت کا ننھے عبداللہ کو نانی کے حوالے کرنے کا حکم

اس موقع پر ایدھی فاونڈیشن کے رہنما فیصل ایدھی نے بتایا کہ عدالت نے گزشتہ روز عبداللہ کو اس کی نانی کے حوالے کرنے کا حکم دیا تھا لیکن نانی کے شناختی کارڈ اور دیگر دستاویزی کی تصدیق نہیں کرائی گئی، جس کے باعث عبداللہ کو اس کی نانی کے حوالے نہیں کیا گیا تھا، عبداللہ کو اس کی نانی کے ہی حوالے کرنا چاہتے تھے کیونکہ عبداللہ کی نانی نے بتایا ہے کہ عبداللہ کی خالہ رابعہ بے اولاد ہے اور وہ عبداللہ کو ایک بیٹے کی حیثیت سے کفالت کرنا چاہتی ہے جبکہ عبداللہ کو اس کے والد کے حوالے کرنے پر کچھ خدشات تھے ۔

عبداللہ کی خالہ رابعہ نے بتایا کہ وہ عبداللہ کو پا کر بہت خوشی محسوس کر رہی ہے، عبداللہ کو کسی بھی قسم کی کوئی پریشانی نہیں ہونے دیں گے اور اس کی کفالت بھرپور طریقے سے کی جائے گی جبکہ عبداللہ کے ماموں عمر کا کہنا تھا کہ عبداللہ کے والد جب چاہیں رابطہ کرکے عبداللہ سے ملاقات کر سکتے ہیں اس سلسلے میں انھیں عدالت نے بھی اجازت دے رکھی ہے۔

مزید پڑھیں : عبداللہ کے والد اور بھائی پہنچ گئے،ایدھی سینٹر کا بچہ دینے سے انکار

یاد رہے کہ گزشتہ روز مقامی عدالت نے ایدھی ہوم میں موجود مقتولہ حلیمہ کے بیٹے عبداللہ کو نانی کے حوالے کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ بچے کے باپ کو بیٹے سے ملاقات کرنے کا اختیار حاصل ہوگا۔

مزید پڑھیں : عبداللہ کیس : مرکزی ملزم رضوان سپرہائی کے قریب سے گرفتار

عدالت نے حکم دیا کہ عبداللہ کے حوالے سے کسی بھی غیر ذمہ داری اور غفلت کی اطلاعات نہیں ملنی چاہئے۔

یاد رہے کہ رواں برس مئی میں رضوان ایاز نامی شخص ایک چھوٹے بچے عبداللہ کو ایدھی سینٹر چھوڑ گیا تھا اور کہا کہ اس کو یہ بچہ دو دریا سے ملا ہے اس کے والدین گم ہوگئے ہیں جسے ایدھی فاؤنڈیشن نے مسنگ چائلڈ کے طور پر اپنے پاس رکھ لیا اور اس کے والدین کی تلاش شروع کردی۔

مزید پڑھیں :   دو دریا سے ملنے والے بچے کے حوالے سے کہانی کا نیا رخ سامنے آگیا

رضوان وہی شخص تھا، جس نے عبداللہ اورا س کی والدہ کو دہلی کالونی میں ناصر منزل میں دوسری منزل پر فلیٹ کرائے پر دلوایا ،کرائے نامہ میں بھی رضوان نے اپنا اوورسیز والا شناختی کارڈ لکھوایا جبکہ رضوان نے ایدھی سینٹر میں غلط بیانی سے کام لیا کہ بچہ اس کو دو دریا سے ملا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں