The news is by your side.

Advertisement

یہود مخالف نسلی تعصب کا الزام، برطانوی رکن پارلیمنٹ پارٹی رکنیت سے مستعفی

لندن: برطانوی رکن پارلیمنٹ لوئیز ایلمن نے اپنی قیادت پر یہود مخالف نسلی تعصب کے الزام کے ردعمل میں 55 سالہ پارٹی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی رکن پارلیمنٹ لوئیز ایلمن اپوزیشن جماعت لیبرپارٹی کے رہنما جیریمی کوربن کے یہودی نسل پرستی میں اضافہ کے الزام پر پارٹی کی 55 سالہ رکنیت سے مستعفی ہوگئیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق برطانوی رکن پارلیمنٹ لوئیز ایلمن نے اپنے ٹویٹ میں خدشہ ظاہر کیا کہ ممکنہ عام انتخابات میں اپوزیشن رہنما جیریمی کوربن کی قیادت ملک کے لیے خطرے کا باعث ہو سکتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ پارٹی رکنیت سے استعفیٰ کے بعد کسی دوسری جماعت میں شمولیت اختیار نہیں کریں گی اور اگر پارٹی قیادت میں تبدیلی آئی تو وہ واپس آ سکتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ممکنہ عام انتخابات میں کوربن کے وزیراعظم بننے کا امکان ہے، لیکن مجھے یقین ہے کہ جیریمی کوربن وزیراعظم کے عہدے کے لیے موزوں نہیں ہیں۔

کیا ہماری زندگی بیکار ہے؟ سیاہ فام یہودیوں کا اسرائیل کے خلاف احتجاج

برطانوی رکن پارلیمنٹ کا مزید کہنا تھا کہ جیریمی کوربن کی قیادت میں لیبر پارٹی میں یہودی نسل پرستی کو ہوا دینے کے باعث یہودی اراکین کو نہ صرف جماعت سے کالا گیا بلکہ نفرت انگیز باتوں کا بھی سامنا کرنا پڑا اور ہم کوربن کو ملک کی قیادت کی اجازت نہیں دے سکتے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں