The news is by your side.

Advertisement

پسند کی شادی کا معاملہ، لاہور ہائی کورٹ میں لڑکی ماں کو روتا چھوڑ کر شوہر کے ساتھ چلی گئی

لاہور : پسند کی شادی کا معاملے پر لاہور ہائی کورٹ میں لڑکی ماں کو روتا چھوڑ کر شوہر کے ساتھ چلی گئی۔

تفصیلات کے مطابق لڑکی نے اپنے پیار پر ماں کی محبت کو قربان کر دیا، ماں واویلہ کرتی رہ گئی مگر بیٹی ان کی طرف دیکھے بغیر خاوند کے ساتھ چلی گئی۔

لاہور ہائی کورٹ میں مسرت بی بی نامی خاتون نے الزام لگایا تھا کہ بیٹی نمرہ کو اغوا کر لیا گیا ہے، عدالت کے حکم پر نمرہ اپنے خاوند سمیت پیش ہوئی، جسے دیکھتے ہی ماں نے گھر چلنے کے لیے منت سماجت شروع کردی۔

نمرہ نے عدالت کے روبرو ماں کو جھوٹا قرار دیا اور بیان دیا کہ اسے کسی نے اغوا نہیں کیا، اس نے اپنی پسند سے شادی کی ہے اور وہ شوہر کے ساتھ جانا چاہتی ہے، جس کے بعد عدالت نے لڑکی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔

عدالت سے باہر نکلنے پر ماں نے بیٹی کو زبردستی ساتھ لے جانے کی کوشش کی، لڑکی کے وکلا نے ماں کو روک لیا، جس کے بعد ماں حسرت و یاس کی تصویر بنی اپنی بیٹی کو جاتا دیکھتی رہ گئی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں