The news is by your side.

کراچی : پسند کی شادی کرنے والے3 جوڑوں کی عدالت سے درخواست

کراچی : پسند کی شادی کرنے والے3جوڑوں نے سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کرلیا، کم عمرلڑکیوں کے والدین نے لڑکوں کے خلاف اغوا کے مقدمات درج کرائے تھے۔

سندھ ہائی کورٹ نے لڑکیوں کی جانب سے دائر کی گئی درخواستیں نمٹا دیں، سماعت کے بعد عدالت نے دو لڑکیوں کو161کا بیان لے کر لڑکوں کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔

پسند کی شادی کرنے والی لڑکیوں نے عدالت کے روبرو بیان دیا کہ ہمیں کسی نے اغوا نہیں کیا ہم نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے۔

بعد ازاں سندھ ہائی کورٹ کے جج نے تفتیشی افسران کو تین دن میں مقدمات کی رپورٹ ٹرائل کورٹ میں پیش کرنے کی ہدایت جاری کردی۔

اس کے علاوہ عدالت نے پولیس کو خیرپور میرس میں پسند کی شادی کرنے والی لڑکی کو بھی تحفظ فراہم کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔

درخواست گزارکے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ لڑکی کو اس کے گھر والوں نے کاری قرار دے دیا ہے، جس کی وجہ سے اس کی جان کو خطرہ لاحق ہے۔

وکیل نے بتایا کہ والدین نے متعلقہ عدالت میں22اے کی درخواست دائر کی ہوئی ہے، لڑکی یا لڑکا متعلقہ عدالت میں پیش ہونے کیلئے گئے تو انہیں قتل کردیا جائے گا۔

وکیل نے استدعا کی کہ ٹرائل کورٹ میں صرف وکیل کے ذریعے پیروی کرنے کی اجازت دی جائے، جس پر سندھ ہائی کورٹ نے درخواست منظورکرلی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں