site
stats
پاکستان

بھائی کی پسند کی شادی کی سزا، پنچایت نے بہن کو ونی کردیا

بہاولنگر: پنچائیت کے فیصلے نے انسانیت کاسر شرم سے جھکادیا، بھائی کی پسند کی شادی کی سزا بہن کو دے ڈالی، لڑکی کے ساتھ چار روز تک زمیندارکے ڈیرے پر اس کی آبروریزی کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق پنچایت نے ظالمانہ فیصلہ دے کرانسانیت کو بھی شرمندہ کردیا، بھائی کی پسند کی شادی کی سزا بہن کو دے ڈالی، بہاولنگرکے نواحی گاﺅں چک نو ر محمد بھنگراں کے رہائشی فیاض نے اپنے گاﺅں کی پروین نامی لڑکی سے عدالت میں اپنی پسند کی شادی کی تھی۔

شادی کے خلاف گاﺅں کے وڈیرے نے اپنے ڈیرہ پر عدالت لگالی، علاقے کے بااثر زمیندار محمد علی چشتی اورعباس نمبردار نے لاقانونیت کا فیصلہ سنایا۔

پنچائیت نے فیصلہ دیا کہ فیاض کی سترہ سالہ بہن کو ونی کردیا جائے، سرپنچوں نے تسلیم بی بی کا نکاح خدا یار کے ساتھ زبردستی نکاح کروا دیا، گن پوائنٹ پر نکاح نامے پر انگوٹھے بھی لگوالیے۔

سرپنچ کے حکم پر ملزمان محمد اقبال، بارش ،ظہور احمد ،حاکم علی سمیت پندرہ مسلح افراد نے فیاض کی بہن 17سالہ تسلیم بی بی کو گھر سے اٹھا لیا ملزمان تسلیم بی بی کو برہنہ کر کے پورے گاﺅں میں گھماتے رہے۔

تسلیم بی بی کے ساتھ دو افراد چار روز تک اجتماعی آبروریزی بھی کرتے رہے اور موبائل فون پر اس کی چیخ و پکار اس کے والد کو سناتے رہے۔

پنچایت نے حکم سنایا کہ فیصلے کی خلاف ورزی کرنے والا فریق پچاس لاکھ روپے جرمانہ ادا کرے گا ونی کی جانے والی تسلیم بی بی اور اس کا خاندان پنچایت اور ملزمان کے خوف سےگھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوگئے۔

متاثرہ خاندان نے وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے انصاف فراہم کرنے کی اپیل کی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top