ناول نگار ایم اے راحت کی نمازِ جنازہ ادا کردی گئی -
The news is by your side.

Advertisement

ناول نگار ایم اے راحت کی نمازِ جنازہ ادا کردی گئی

لاہور: اُردو ادب کو سیکڑوں شہرہ آفاق ناول دینے والے ایم اے راحت انتقال کرگئے‘ نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد انہیں لاہور میں سپرد خاک کردیا گیا۔

بچوں اور بڑوں میں مقبولیت کی معراج پانے والے ایم اے راحت گزشتہ کئی دنوں سے شدید علیل تھے،اُن کے بیٹے نے لوگوں سے دعائے صحت کی اپیل کی بھی کی تھی تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے۔

خاندانی ذرائع کے مطابق  ایم اے راحت کی نماز جنازہ آج بعد از نماز عشا جامعہ مسجد رضوان اعوان ٹاؤن سے ملحقہ گراؤنڈ میں ادا کردی گئی۔

اطلاعات ہیں کہ اُردو ادب کے سُرخیل ایم اے راحت دماغ میں رسولی کے باعث لاہور کے جناح اسپتال میں زیرعلاج تھے ، وہ گزشتہ کئی دن سے کومے میں تھے اور آج 24 اپریل بروز پیر رضائے الہی سے خالقِ حقیقی سے جاملے۔

آٹھ سو سے زائد ناول تحریر کیے

ایم اے راحت کا شمار اردو ادب کے بڑے ناموں میں ہوتا ہے، انہوں نے 800 سے زائد ناول تحریر کیے جن میں کالاجادو، ناگ دیوتا، کمند، کالے گھاٹ والی، کفن پوش، صندل کے تابوت، شہر وحشت، جھرنے، سایہ، اورکالے راستے دیومالائی کہانیوں پر مشتمل تخلیقات میں سے ہیں۔

وفات سے کچھ دن قبل کی تصویر

انہوں نے بچوں کے لیے بے شمار کہانیاں لکھیں ، تلفُظ اور املا کے ساتھ ایسی لفاظی کی کہ بچے بآسانی پڑھ کر اُن کے گرویدہ ہوئے ، عمران سیریز میں ان کی کہانیاں لیڈی پارکر،کالی طاقت اور عمران ان ایکشن آج بھی مقبول عام ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں