The news is by your side.

Advertisement

فریج سے کھانا نکال کر کھانے پر گھریلو ملازمین پر بہیمانہ تشدد، ایک دم توڑ گیا

لاہور: صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں فریج سے کھانا نکال کر کھانے پر 2 کمسن گھریلو ملازمین کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا جس سے ایک ملازم دم توڑ گیا۔

تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت لاہور کے علاقے ڈیفنس میں 2 کمسن گھریلو ملازمین پر تشدد کا واقعہ پیش آیا ہے جس میں ایک ملازم جاں بحق ہوگیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ کراچی کے رہائشی دونوں بھائی ایک سال سے نصر اللہ نامی شہری کے گھر پر کام کر رہے تھے، 12 سالہ کامران اور 6 سالہ رضوان پر اہل خانہ کی جانب سے بہیمانہ تشدد کیا گیا۔

پولیس کے مطابق دونوں بچوں کی حالت غیر ہونے پر ملزمان انہیں نجی اسپتال لے کر گئے، اسپتال کے عملے نے بچوں کی حالت دیکھ کر پولیس کو اطلاع دی۔

ملازمین پر تشدد کے الزام میں نصر اللہ اور گھر کی 2 خواتین سمیت 5 افراد کو گرفتار کرلیا گیا، پولیس کی حراست میں ملزمان نے بیان دیا کہ بچوں کو فریج سے اشیا نکال کر کھانے پر تشدد کا نشانہ بنایا۔

انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب نے گھریلو ملازم کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی لاہور سے رپورٹ طلب کرلی۔ انہوں نے کہا کہ بچوں پر تشدد کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں۔

دوسری جانب وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے بھی واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پولیس سے رپورٹ طلب کی ہے۔

وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ تشدد کے ذمہ داروں کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی کی جائے، زخمی بچے کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں۔

انہوں نے کہا کہ معمولی واقعے پر معصوم بچے کی جان لینا انتہائی افسوسناک ہے، کیس کے حوالے سے انصاف کے تمام تقاضے پورے کیے جائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں