پولیس اہلکار کو کچلنے والے ایم پی اے کی شاہانہ اندازمیں پیشی majeed-achakzai
The news is by your side.

Advertisement

پولیس اہلکارکوکچلنے والے ایم پی اے مجید اچکزئی کی صحافیوں سے بد تمیزی

کوئٹہ: پولیس اہلکارکو گاڑی سے کچلنے کے الزام میں گرفتار بلوچستان کے ایم پی اے مجید اچکزئی کو آج عدالت  میں بغیر ہتھکڑی لگائے پیش کیا گیا۔ عدالت میں پیشی پر ملزم نے صحافیوں سے بد تمیزی بھی کی۔

تفصیلات کے مطابق پولیس اہلکار حاجی عطاءاللہ مصروف شاہراہ پر ٹریفک کی روانی کو بحال رکھنے کے لیے اپنی ڈیوٹی انجام دے رہے تھے کہ اچانک تیز رفتار گاڑی نے ٹکر مار کرشدید زخمی کردیا تھا جنہیں اسپتال لے جایا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے۔

سی سی ٹی وی فوٹیجز سے پتہ چلا کہ سپاہی کو ٹکر مارنے والی تیز رفتار گاڑی کے مالک ایم پی اے مجید اچکزئی ہیں اور وہ مبینہ طور پرحادثے کے وقت گاڑی خود چلا رہے تھے۔

پولیس نے مجید اچکزئی کے ڈرائیورکو گرفتار کرنے کے بعد ایم پی اے کے گھر پر چھاپا مارکر انہیں بھی حراست میں لے لیا اور تھانے منتقل کردیا۔


 *کوئٹہ میں رکن بلوچستان اسمبلی کی گاڑی نے ٹریفک اہلکار کو کچل دیا 


آج مجید اچکزئی کو عدالت بغیر ہتھکڑی لگائے شاہانہ انداز میں عدالت کے سامنے پیش کیا گیا جہاں بغیرریمانڈ حاصل کیے ہی تھانے منتقل کردیا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ایم پی اے مجید اچکزئی کو کل دوبارہ پیش عدالت میں پیش کیا جائے گا اور جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جائے کیوں کہ پولیس کے پاس شواہد موجود ہیں کہ حادثے کے وقت وہ گاڑی خود چلا رہے تھے۔

بعد ازاں میڈیا پر خبریں آنے کے بعد ایم پی اے مجید اچکزئی کو دوبارہ عدالت لایا گیا اور معزز عدالت سے ریمانڈ کی استدعا کی گئی جسے قبول کرتے ہوئے عدالت نے ملزم کو 5 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔


 *بلوچستان اسمبلی کےرکن مجیدخان اچکزئی گرفتار 


دریں اثناء ایم پی اے مجید اچکزئی عدالت پیشی کے وقت میڈیا نمائندوں کو دیکھ کرصحافیوں پر برس پڑے اور کہا کہ دھماکے کی فوٹیج نہیں تو ملی لیکن پولیس والے کی ویڈیومل گئی ہے۔

 واضح رہےکہ عبدالمجید اچکزئی 2013 کے عام انتخابات میں ضلع قلعہ عبداللہ کی سیٹ پی بی-13 سے رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں