The news is by your side.

Advertisement

امریکا کی بیشتر ریاستوں کا فلسطینی علاقوں میں یہودی آباد کاری کی سرپرستی کا انکشاف

واشنگٹن : انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائیٹس واچ نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا کی بیشتر ریاستیں صہیونی ریاست کی طرف داری کرتی ہوئے مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں غیر قانونی یہودی آباد کاری کی سرپرستی کر رہی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق انسانی حقوق کے عالمی ادارے کا کہنا تھا کہ امریکا کی ریاستیں مقبوضہ مغربی کنارے میں یہودی آباد کاری کے فروغ کے لیے اپنے قوانین اور ایگزیکٹو آرڈرز کا استعمال کرتی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ امریکا کی 27 ریاستیوں کی 20 کروڑ 50 لاکھ آبادی جو کہ کل 78 فی صد آباد ہیں، اپنے قوانین اور ایگزیکٹو آرڈر کو فلسطین میں یہودی آباد کاری کے لیے استعمال کرتی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکا کی 17 ریاستوں کے قوانین صہیونی ریاست کے ساتھ صراحت کے ساتھ ہر قسم کے کاروبار کی اجازت دیتی ہیں بلکہ بہت سی ریاستیں فلسطین میں یہودی آباد کاری کے لیے کام کرنے والی کمپنیوں کی مکمل سر پرستی کرتی ہیں۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ اسی طرح یہ ریاستیں قوانین کا استعمال کرتے ہوئے اسرائیلی ریاست کا بائیکاٹ کرنے والی کمپنیوں، اداروں اور افراد کو بھی نشانہ بناتی ہیں۔

ہیومن رائیٹس واچ کا کہنا تھا کہ امریکی ریاستیں فلسطین میں یہودی آباد کاری میں معاونت کرکے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کررہی ہیں۔ ان ریاستوں کی طرف سے اپنی قوانین کا فلسطین میں یہودی آباد کاری کے لیے استعمال ناقابل قبول اور شرمناک ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں