سوات جنت کاٹکڑا ہے،واپس آئی ہو خوشی کی کوئی انتہا نہیں،ملالہ یوسفزئی
The news is by your side.

Advertisement

سوات جنت کاٹکڑا ہے، یہاں پہنچ کرمیری خوشی کی کوئی انتہانہیں،ملالہ یوسف زئی

سوات: ملالہ یوسف زئی کا کہنا ہے کہ سوات جنت کا ٹکڑا ہے،یہاں پہنچ کرمیری خوشی کی کوئی انتہا نہیں،تعلیم مکمل ہونے کے بعد سوات واپس آؤں گی۔

تفصیلات کے مطابق نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی نے سوات میں کیڈٹ کالج کا دورہ کیا اور طلبا سے ملاقات کی جبکہ تاثراتی کتاب میں لکھا حملے کےساڑھے پانچ سال بعد سوات کا یہ میرا پہلا دورہ ہے۔

کیڈٹ کالج میں بچوں سے بات چیت کرتے ہوئے ملالہ نے کہا کہ سیکیورٹی فورسز کے قربانیوں کے باعث سوات میں امن قائم ہوا، تعلیم مکمل ہو نے کے بعد سوات واپس آؤں گی۔

ملالہ یوسف زئی نے مزید کہا کہ سوات جنت کاٹکڑاہے، یہاں پہنچ کرمیری خوشی کی کوئی انتہانہیں، میرے لیے اس سےزیادہ خوشی کی بات کوئی نہیں کہ اپنےگھرآئی ہوں، میں اپنےاسکول بھی گئی اوراس جگہ بھی گئی جہاں مجھ پرحملہ ہواتھا۔

ان کا کہنا تھا کہ خوشی ہےاب سب کچھ بدل گیا ہے،میری سہیلیاں اسکول جارہی ہیں، خوشی ہےسوات میں خوف کاراج ختم ہوگیا ہے، میرےسوات کےبزرگوں،بھائیوں اوربہنوں نےقربانیاں دیں۔

ملالہ نے کہا کہ خوف کاراج ختم کرنےکیلئےپاک فوج نےقربانیاں دیں، اسکول جاتی لڑکیوں کو دیکھ کر میرا دکھ دور ہوگیاہے، ہرمشکل وقت میں قومیں قربانیاں دے کر کامیاب ہوتی ہیں، ہم بھی الحمداللہ کامیاب ہیں۔

اس سے قبل ملالہ یوسف زئی والدین اور بھائی کے ہمراہ آبائی گھر پہنچیں تو آبدیدہ ہوگئیں تھیں۔

یاد رہے آج صبح ملالہ یوسف زئی ساڑھے پانچ سال بعد بذریعہ ہیلی کاپٹر اسلام آباد سے سوات پہنچیں ، والد، والدہ اوربھائی سمیت وزیر مملکت برائے اطلاعات مریم اورنگزیب بھی ان کے ہمراہ تھے، اس موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتطامات کئے گئے تھے۔


مزید پڑھیں: طالبان حملے کے بعد پہلی بار ملالہ یوسف زئی کی سوات آمد


گذشتہ روز اے آر وائی کے پروگرام سوال یہ ہے میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ملالہ کا کہنا تھا کہ ہرانسان کومرضی کےمطابق زندگی گزارنےکاحق ہے، بچوں کی تعلیم پاکستان کیلئے بہت اہم ہے، ٹیکنالوجی کا دور ہے دنیا آگے جارہی ہے ہمیں بھی آگے جانا ہوگا۔

ملالہ یوسفزئی کا کہنا تھا کہ پاکستانی ڈاکٹرز نے حملے کے بعد سرجری کر کے جان بچائی، وطن واپس آکر بہت اچھا محسوس کررہی ہوں اور پاکستان میں تعلیم کے لیے جو کام جاری ہے اُسے بڑھانا چاہتی ہوں، سیاست کا کوئی شوق نہیں اس کے بغیر بھی تبدیلی لائی جاسکتی ہے۔

خیال رہے کہ 29 مارچ کو نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی 6 سال بعد اپنے والدین کے ہمراہ چار روزہ دورے پر پاکستان پہنچیں تھیں، پاکستان میں قیام کے دوران ملالہ اہم شخصیات سے ملاقات اورکئی تقریبات میں شرکت کریں گی۔

واضح رہے 2012 میں مینگورہ میں ملالہ یوسف زئی پر اسکول سے گھر جاتے ہوئے طالبان نے حملہ کردیا تھا، جس میں وہ شدید زخمی ہوئی تھیں، ابتدائی طورپر ملالہ کو پاکستان میں ہی طبی امداد دی گئی تاہم بعد میں انہیں برطانیہ کے اسپتال میں منتقل کردیا گیا تھا۔

امن کا نوبیل انعام حاصل کرنے کے علاوہ متعدد ایوارڈ حاصل کرنے والی 20 سالہ ملالہ اس وقت برطانیہ کی آکسفورڈ یونیورسٹی میں زیرتعلیم ہیں۔

ملالہ یوسف زئی 3 سال تک دنیا کی بااثرترین شخصیات کی فہرست میں شامل رہیں جبکہ ان کو کینیڈا کی اعزازی شہریت بھی دی گئی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں