The news is by your side.

بلوچستان میں ملیریا بے قابو، مزید 3 کمسن بچے لقمہ اجل بن گئے

کوئٹہ: صوبہ بلوچستان میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں ملیریا کی وبا بے قابو ہوگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سیلاب سے متاثرہ ضلع جعفرآباد کے سیلاب زدہ علاقوں میں حالات انتہائی ناگفتہ ہیں، متعدد علاقوں میں ملیریا وبا بے قابو ہوچکی، جس کے باعث روزانہ کی بنیاد پر سینکڑوں افراد ملیریا میں مبتلا ہورہے ہیں۔

اوستہ محمد کے اسپتال میں ملیریا مریضوں کے لئے بستر کم پڑچکے ہیں اور موذی بیماری میں مبتلا افراد اسپتال کے اندر فرش پر لیٹے اپنے علاج کے منتظر ہیں جبکہ ضلع بھر میں ملیریا کےعلاج کی دوائیں ناپید ہو چکیں ہیں۔

اطلاعات ہیں کہ گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ملیریا نے تین کمسن بچوں کی زندگی کا خاتمہ کردیا ہے۔

یہی نہیں بلوچستان کے ضلع ڈیرہ مراد جمالی، نصیرآباد کے کیمپوں میں طبی سہولتوں کی عدم فراہمی پر بچے، حاملہ خواتین اور بزرگ افراد بیمار پڑنے لگے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: سیلاب زدہ علاقوں میں ڈینگی، ملیریا اور گیسٹرو پھیلنے لگا

دوسری جانب پی ڈی ایم اے بلوچستان کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ سیلاب کے باعث مزید تیرہ افراد موت کے منہ میں چلے گئے، جاں بحق افراد میں ایک مرد، تین بچے اور نو خواتین شامل ہیں۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق بلوچستان میں سیلاب سےجاں بحق افراد کی تعداد294تک پہنچ گئی ہے، جاں بحق ہونےوالوں میں134مرد،73خواتین،87بچےشامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں