The news is by your side.

Advertisement

ملیشیا: معاشی بحالی کی امیدیں دم توڑنے لگیں،مہاتیر محمد کی مقبولیت میں کمی

کوالالمپور: ملیشیا میں معاشی حالات میں بحالی کی امیدیں دم توڑنے لگیں،  مہاتیر محمد کی مقبولیت میں بھی کمی آئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایک سال قبل 93 سالہ مہاتیر محمد کے اقتدار میں‌ آنے سے بہتری کی جو امید پیدا ہوئی تھی، اب وہ دھندلانے لگی ہے.

ایک ملک گیر سروے کے مطابق حکومت کی حمایت کم ہو کر 39 فی صد ہوگئی، اگست 2018 میں یہ 66 فیصد تھی۔

مہاتیر محمد کی جماعت معاشی انقلاب اور معیشت میں‌ بہتری کے وعدوں کے ساتھ اقتدار میں آئی تھی، البتہ اس اپ سیٹ کے بعد مہاتیر محمد کی پارٹی کوئی جادو نہیں جگا سکی.

خیال رہے کہ یونائیٹڈ ملائیز نیشنل آرگنائزیشن (یو ایم این او) گزشتہ 60 سال میں پہلی مرتبہ اقتدار سے محروم ہوئی تھی. مہاتیر محمد اور پکاتن ہراپن اتحاد نے جیت اپنے نام کی.

مزید پڑھیں: ملیشین وزیراعظم مہاتیر محمد نے یوم پاکستان کی پریڈ کی ویڈیو فیس بک پر پوسٹ کردی

اس اتحاد کو ورثے میں قرض میں ڈوبی معیشت ملی تھی، انتظامیہ نے اربوں ڈالر کی کرپشن ختم کرنے پر توجہ مرکوز کی اور سابق وزیر اعظم نجیب رزاق کے خلاف کرپشن تحقیقات کا آغاز کیا.

حکمراں اتحاد میں تقسیم کی وجہ سے حکومتی ریونیو میں اضافے، سرمایہ کاروں کو متوجہ کرنے اور ملازمتوں کے مواقع پیدا کرنے کی کوششیں سبوتاڑ ہوگئیں ہیں۔ اسی عرصے میں مہاتیر محمد کی مقبولیت بھی 71 فیصد سے کم ہوکر 46 فیصد ہوگئی ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں