ریسٹورنٹ میں فائرنگ : بااثر ملزمان کی فاتحانہ اندازمیں عدالت حاضری، پولیس نے ریمانڈ بھی نہ لیا -
The news is by your side.

Advertisement

ریسٹورنٹ میں فائرنگ : بااثر ملزمان کی فاتحانہ اندازمیں عدالت حاضری، پولیس نے ریمانڈ بھی نہ لیا

کراچی : ملیر کے ریسٹورنٹ میں فائرنگ کرنے والے ملزمان کے سامنے قانون کمزور پڑگیا، مونچھوں کو تاؤ دیتے ہوئے عدالت میں انٹری دینے والے بااثر ملزمان کا پولیس نے ایک دن کا بھی ریمانڈ نہیں مانگا۔

تفصیلات کے مطابق امیر باپ کی بگڑی اولادوں نے روشنیوں کے شہر کو اپنی جاگیر سمجھ لیا، سڑکوں پر بدمعاشی اور ریسٹورنٹ میں فائرنگ کرنے والے مصطفٰی عرف بابر راشدی اور اطہر راشدی نے قانون کو چیلنج کردیا۔

گزشتہ دنوں ملیر کراچی کے ہوٹل میں فائرنگ کرنے والے مصطفی عرف بابر راشدی کا اثر و رسوخ پولیس پر بھاری پڑنے لگا، ملزمان کو اپنے کیے پر نہ افسوس ہے اور نہ ہی ندامت بلکہ ملزم مصطفٰی عرف بابر نے فاتحانہ مسکراہٹ کے ساتھ عدالت میں انٹری دی۔

عدالت میں پولیس نے ایک دن کا ریمانڈ بھی نہ مانگا؟ عدالت نے گرفتار ملزمان میر مصطفی عرف بابر راشدی اور اطہر راشدی کو جیل بھیجنے کا حکم دیا، پولیس بھی اب تک بااثرملزمان کے خلاف کوئی ثبوت نہ ڈھونڈ سکی۔

پولیس والوں نے کیس کے واحد مدعی کچن مینجر دلاور کے پاس بھی دوبارہ جانے کی زحمت نہیں کی، صرف اتنا ہی نہیں پولیس نے تفتیش کو بھی بریک لگادیئے۔

طاقتور شخصیات کے سامنے قانون کمزور پڑگیا۔ سی سی ٹی وی حاصل نہ کرنے کا ملبہ بھی ریسٹورنٹ انتظامیہ پر ڈال دیا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ریسٹورنٹ والے فوٹیج نہیں دے رہے۔

سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا پولیس کو سی سی ٹی وی کے لئے کسی سے اجازت کی ضرورت  ہوتی ہے؟ پولیس ریسٹورنٹ کے ہجوم سے کوئی عینی شاہد بھی تلاش کیوں نہ کرسکی، پولیس کڑیاں ملانے سےڈر رہی ہے کسی کو تو سوالوں کا جواب دینا ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں