The news is by your side.

Advertisement

پاک ترک تعلقات تاریخ سے جڑے ہوئے ہیں ، صدرمملکت ممنون حسین

اسلام آباد : صدرمملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان اورترکی کے تعلقات مذہب، ثقافت اورمشترکہ تاریخ سے جڑے ہوئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار صدر مملکت نے ترکی کے وزیر برائے قومی دفاع فکری اسیق سے گفتگو کے دوران کیا۔

ترکی کے وزیر دفاع نے وفد کے ہمراہ صدرممنون حسین سے ملاقات کی۔ اس موقع پر صدر ممنون حسین نے ترکی کے صدر رجب طیب اردگان کے جمہوری اقدامات کی تعریف کی اور بینالی یلدریم کی قیادت میں نئی حکومت کی تشکیل پر مبارک باد بھی دی۔

صدر پاکستان کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان میں امن واستحکام کے لیے پرعزم ہے اورپاکستان ترکی کی افغانستان میں امن کی کوششوں کوسراہتا ہے۔ انہوں نے پاکستان، ترکی اور قطر کے مابین افرادِ کارکی تربیت اور ٹیکنالوجی کے تبادلے کا معاہدہ مستحسن اقدام ہے۔

صدر مملکت نے ترکی کی طرف سے پاکستان ٹرینر۔ 37ایئر کرافٹس کا تحفہ دینے پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ دونوں برادرملک دفاع کے میدان میں تعاون جاری رکھیں گے اور ایک دوسرے کے تجربات سے فائدہ بھی اٹھائیں گے۔

صدر مملکت نے ترکی کے وفد کوآئیڈیاز۔2016 میں شرکت کی دعوت بھی دی۔ انہوں نے قدرتی آفات کے موقع پر ترکی کے تعاون کو سراہا۔ انہوں نے ترکی میں حالیہ خود کش حملوں سے جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کیا اور اس عزم کو دہرایا کہ دونوں ملک دہشت گردی کے ناسور کو ختم کرنے کے لیے متحد ہیں۔

ترکی کے وزیر دفاع فکری اشک نے کہا کہ نئی ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد ان کابیرون ملک کا پہلا دورہ پاکستان کا ہے۔ فکری اشک نے کہا کہ تجارت اور دفاع کے میدان میں تعاون صلاحیت سے کم ہے.

اس سلسلے میں دو طرفہ تعاون کو مزید بڑھانے کے لیے اقدامات کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ترکی کے عوام پاکستان کی بہت قدر کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ترکی افغانستان میں امن کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھے گا اور اس سلسلے میں چار ملکی گروپ کی کوششیں رنگ لائیں گے۔

صدر مملکت ممنون حسین نے امید کا اظہار کیا کہ ترکی کے وفد کا پاکستان میں قیام خوش گوار رہے گا۔ صدر مملکت نے اپنی اور پاکستانی عوام کی جانب سے ترکی کے صدر رجب طیب اردگان ، وزیراعظم بینالی یلدریم اور ترکی کے عوام کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں