The news is by your side.

Advertisement

اوکاڑہ: بچوں کو لٹکا کر بد ترین تشدد کرنے والا چچا گرفتار

اوکاڑہ: بچوں کو لٹکا کر بد ترین تشدد کرنے والے بے رحم چچا کو پولیس نے گرفتار کر لیا، پولیس نے کارروائی بچوں پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد کی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب کے شہر اوکاڑہ میں ماں سے ملنے جانے کی زد کرنے پر چچا یعقوب نے بھتیجوں کو بد ترین تشدد کا نشانہ بنایا، ایک بچے کو کپڑے سے باندھ کر لٹکایا اور چپلوں اس کی پٹائی کی۔

چچا کے بچوں پر تشدد کی ویڈیو منظر عام پر آئی تو ڈی پی او جہانزیب نذیر خان نے نوٹس لے کر ملزم کو گرفتار کر لیا، ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بچے روتے رہے لیکن ظالم چچا نے ایک نہ سنی۔ بتایا گیا ہے کہ بچوں کی ماں ناراض ہو کر میکے چلی گئی تھی اور بچوں کو ان کے چچا کے گھر پر چھوڑ دیا تھا۔

ڈی پی او اوکاڑہ نے میڈیا کو بتایا کہ بچوں پر تشدد کرنے والے شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے، بچوں کو ان کے ہمسائے نے تشدد کا نشانہ بنایا تھا، ملزم کو عدالت میں پیش کیا جائے گا، واقعہ چند روز پہلے کا ہے، فوٹیج آج ملی جس پر کارروائی کی گئی۔

ماں سے ملنے جانے پر چچا کا بھتیجوں پر بد ترین تشدد

ماں سے ملنے جانے پر چچا کا بھتیجوں پر بد ترین تشدد — چھوٹے سے معصوم بچے کو کپڑے سے باندھ کر لٹکا دیا — بچے روتے رہے، فریاد کرتے رہے، ظالم کو ترس نہ آیا — اوکاڑہ میں درندہ صفت بھتیجوں پر بیہمانہ تشدد#ARYNews

Posted by ARY News on Saturday, 19 October 2019

ادھر بچوں پر تشدد کا واقعہ سامنے آنے پر وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر ڈپٹی کمشنر اوکاڑہ نے بچوں کے گاؤں جا کر بچوں اور ان کے والدین سے ملاقات کی، جہاں ڈپٹی کمشنر نے واقعے کی تفصیلات معلوم کیں اور بچوں کی دل جوئی کرتے ہوئے ان سے ہم دردی کا اظہار کیا۔

ڈپٹی کمشنر کا کہنا تھا وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر بچوں کا طبی معائنہ کرایا جائے گا، بچوں کی تعلیم اور علاج معالجے کے لیے بھی حکومت ہر ممکن مدد کرے گی، وزیر اعلیٰ کی ہدایت پر بچوں کو اوکاڑہ کے اسکول میں بھی داخل کرائیں گے، اور ان کی بیمار والدہ کا علاج بھی کرایا جائے گا، والد کو بھی سرکاری ملازمت دی جائے گی۔

ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ تشدد کا ذمہ دار قانون کے تحت سزا سے نہیں بچ پائے گا۔ انھوں نے بچوں کو نئے کپڑے بھی دیے۔

ملزم کا بیان

بچوں پر تشدد کرنے والے ملزم نے اعتراف جرم کر لیا، میڈیا کے سامنے بیان دیتے ہوئے ملزم نے کہا کہ وہ اپنے کیے پر شرمندہ ہے، ایک بار معافی مل جائے تو پھر ساری زندگی ایسا دوبارہ نہیں کروں گا، بھتیجوں کو ماں کے پاس جانے کی ضد کرنے پر مارا تھا۔

پولیس کے تفتیشی افسر کا کہنا ہے کہ ملزم بچوں کا قریبی عزیز ہے، اس کے خلاف مقدمہ پولیس کی مدعیت میں درج کر لیا گیا ہے، ملزم نے پولیس کے سامنے بھی اعتراف جرم کر لیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں