The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کے “مشورے” نے امریکی شہری کی جان لے لی!

ایریزونا: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی تجویز الٹی پڑ گئی، ملیریا کی دوا کرونا وائرس کا علاج ثابت ہونے کی بجائے موت کا باعث بن گئی۔

تفصیلات کے مطابق ایک امریکی نے ٹرمپ کی تجویز کے بعد گھر میں کلوروکوئن ملا کیمیکل استعمال کر کے موت کو گلے لگا لیا، جب کہ اس کی بیوی کو نازک حالت میں اسپتال میں داخل کر دیا گیا۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ 60 سالہ میاں بیوی نے امریکی صدر کی ‘معجزانہ دوا’ کی تیاری کے چکر میں اپنی جانیں خطرے میں ڈالیں، ٹرمپ نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ کے ذریعے ملیریا کی دوا کلوروکوئن کے بارے میں کہا تھا کہ یہ کرونا وائرس کے علاج میں مؤثر ثابت ہو رہی ہے۔

کیا ملیریا کی دوا کلوروکوئن کرونا کا مقابلہ کر سکتی ہے؟

امریکی ریاست ایریزونا کے محکمہ صحت کا کہنا تھا کہ مذکورہ میاں بیوی نے کلوروکوئن فاسفیٹ کھالیا تھا جو گھروں میں عام طور پر ایکوریم کلینر کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے، کیمیکل استعمال کرنے کے آدھے گھنٹے کے بعد انھیں اسپتال پہنچایا گیا، تاہم مرد کو نہیں بچایا جا سکا جب کہ خاتون کی حالت نازک ہے۔

خیال رہے کہ ماہرین کی جانب سے پہلے ہی خبردار کیا گیا تھا کہ ملیریا کی دوا کے بارے میں ابھی تک کوئی سائنسی ثبوت نہیں ملا ہے کہ یہ کرونا وائرس کے علاج میں مؤثر ہے یا نہیں۔ مقامی محکمہ صحت کی جانب سے یہ بھی کہا گیا کہ چوں کہ کووِڈ 19 کے بارے میں ابھی تک غیر یقینی صورت حال ہے، اس لیے لوگ نئے راستے تلاش کر رہے ہیں، تاہم اس کا یہ مطلب نہیں کہ لوگ سیلف میڈیکیشن شروع کر دیں۔

محققین تاحال ملیریا کی دوا کلوروکوئن پر تجربات کر رہے ہیں تاہم یہ ثابت نہیں ہو سکا ہے کہ یہ کرونا وائرس کے لیے مؤثر ہے یا نہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں