وفاقی کابینہ کا صدر نیشنل بینک کو ہٹانے کا فیصلہ، جنوبی پنجاب صوبے کے لیے کمیٹی قائم -
The news is by your side.

Advertisement

وفاقی کابینہ کا صدر نیشنل بینک کو ہٹانے کا فیصلہ، جنوبی پنجاب صوبے کے لیے کمیٹی قائم

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں صدر نیشنل بینک کو ہٹانے اور جنوبی پنجاب صوبے کے لیے کمیٹی کے قیام سمیت متعدد اہم فیصلے کیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں منعقد ہونے والے اہم ترین وفاقی کابینہ اجلاس میں نیشنل بینک کے صدر سعید احمد خان کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا جب کہ طارق جمالی کو قومی بینک کا قائم مقام صدر مقرر کیا گیا۔

وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری نے اجلاس کے بعد نیوز کانفرنس میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ سعید احمد اشتہاری اسحاق ڈار کے ساتھ منی لانڈرنگ میں ملوث تھے۔

وفاقی کابینہ میں جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کے لیے  بھی کمیٹی بنائی گئی ہے جس میں وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی اور خسرو بختیار شامل ہیں، کمیٹی آئینی ترمیم کے لیے مسلم لیگ (ن) اور دیگر جماعتوں سے رابطہ کرے گی۔

فواد چوہدری نے بتایا کہ اجلاس میں نیب کے قوانین میں بھی ضروری ترامیم کی منظوری دی گئی، ترامیم کے لیے وزیرِ قانون فروغ نسیم کی سربراہی میں ٹاسک فورس قائم کر دی گئی جو ضروری ترامیم کی سفارشات پیش کرے گی۔

انھوں نے کہا کہ کابینہ میں سِول قوانین میں اصلاحات کے لیے ٹاسک فورس بنائی گئی ہے، فیصلہ کیا گیا کہ وفاقی حکومت کے عہدوں کی تنظیمِ نو اور وزارتوں اور محکموں کے اخراجات میں کمی کے لیے بھی مکینزم بنایا جائے گا۔

نیب کے قوانین میں بھی ضروری ترامیم کی منظوری دی گئی

فواد چوہدری نے کہا کہ کابینہ اجلاس میں 100 روزہ پلان پرعمل در آمد کا جائزہ لیا گیا، اب 100 کے بجائے 90 دن کا ایجنڈا رہ گیا ہے، کابینہ میں اس پر غور کیا گیا۔

کابینہ میں ایک کروڑ نوکریاں نکالنے اور 50 لاکھ گھروں کے لیے بھی ٹاسک فورس بنائی گئی، اس سلسلے میں ٹاسک فورس کو 90 دن کا وقت دیا گیا ہے۔

ایک کروڑ نوکریاں نکالنے اور 50 لاکھ گھروں کے لیے بھی ٹاسک فورس قائم

فواد چوہدری نے بتایا کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں فاٹا کے خیبر پختونخوا کے ساتھ انضمام کے عمل کو تیز کرنے کے لیے بھی کمیٹی بنادی گئی ہے، جس میں گورنر، وزیراعلیٰ، وزیر دفاع اور مشیر اسٹبلشمنٹ شامل ہوں گے۔

فواد چوہدری نے کہا ’فوج اور حکومت ایک ہی صفحے پر ہیں، کتاب بھی ایک ہے، ماضی میں بھی فوج اور حکومت ایک صفحے پر تھے مگر کتاب الگ الگ تھی۔‘

واضح رہے کہ وزیرِ اعظم ہاؤس میں یہ وفاقی کابینہ کا ہونے والا تیسرا اجلاس تھا، جس میں 9 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا، وزیرِ اعظم ہر 15 دن بعد تمام ٹاسک فورسز سے پیش رفت رپورٹ لیں گے۔


وزیراعظم نےشہریارآفریدی کووزیرمملکت برائے داخلہ بنانے کی منظوری دے دی


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں