مقبوضہ کشمیربھارت کا اٹوٹ انگ نہیں، پاکستان نے دعویٰ مسترد کردیا -
The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیربھارت کا اٹوٹ انگ نہیں، پاکستان نے دعویٰ مسترد کردیا

اسلام آباد : پاکستان نے بھارت کے اس دعوے کو جس میں کہا گیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے سختی سے مسترد کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے عوام کی مرضی کے مطابق انہیں آزاد و غیرجانبدراور شفاف استصواب رائے کا حق دے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفترخارجہ نفیس زکریا نے کہا ہے کہ ہم بھارت کے اس دعوے کو کہ مقبوضہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے سختی سے مسترد کرتے ہیں کیونکہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق جموں و کشمیر ایک بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ متنازعہ ریاست ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ بھارت کے بانی رہنماؤں کی جانب سے سلامتی کونسل میں اعتراف کے باوجود مقبوضہ کشمیر کے پسے ہوئے عوام کو حق خودارادیت دینے سے انکار کیا گیا۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جواب انتہائی اشتعال انگیز اور بین الاقوامی انسانی حقوق ، انسانیت پرمبنی قوانین اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہیں۔

پاکستانی عوام میں نہتے اور معصوم کشمیری عوام کے خلاف بربریت پرشدید رنج و غم ہے، بے گناہ اور نہتے عوام اپنا پر امن مظاہرے کا حق استعمال کر رہے ہیں۔

نفیس زکریا کا کہنا تھا کہ 19 جولائی 1947 کو مسلم کانفرنس نے ایک قرارداد کی متفقہ طور پر منظوری دی تھی جس میں پاکستان سے الحاق کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

جمہوریت کا دعویدار ہونے کے باوجود بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں عوامی خطاب، موبائل فونز، انٹر نیٹ، کیبل ٹی وی، پرنٹ و سوشل میڈیا پر پابندی لگا رکھی ہے اکثر حصوں میں سخت کرفیو کا نفاذ رہتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق مقبوضہ کشمیر کے عوام کی مرضی کے مطابق انہیں آزاد و غیرجانبداراور شفاف استصواب رائے کا حق دے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں