The news is by your side.

Advertisement

مارگلہ ہلز میں آگ لگا کر ٹک ٹاک بنانے والوں کی شامت آگئی

وفاقی دارالحکومت کے مارگلہ ہلز میں آگ کے ساتھ ٹک ٹاک بنانے والوں کیخلاف کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سی ڈی اے، اسلام آباد وائلڈلائف مینجمنٹ بورڈ نے پولیس سے مدد لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

ڈی جی وائلڈ لائف کا کہنا ہے کہ مارگلہ ہلز میں آگ کیساتھ ٹک ٹاک بنانے والے کی شناخت ہو گئی ہے ٹک ٹاکرز کیخلاف کارروائی کیلئے پولیس کو درخواست دی جارہی ہے۔

ڈی جی انوائرمنٹ سی ڈی عرفان نیازی نے کہا کہ مارگلہ ہلز میں لگی آگ پر مکمل قابو پالیا مارگلہ ہلزمیں نگرانی بڑھادی گئی ہے گرمی کے موسم میں مارگلہ ہلز میں آگ لگنےکے واقعات ہوتےہیں پولیس تحقیقات کرے گی آگ ٹک ٹاکرز نے لگائی یا نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نوجوان فالورز کیلئے جنگلات کو آگ لگا رہے ہیں آسٹریلیامیں جنگل کوآگ لگانےپرعمرقیدکی سزا ہے پاکستان میں بھی سخت قانون سازی کی ضرورت ہے۔

ترجمان ٹک ٹاک کا کہنا ہے کہ کوئی بھی مواد جو خطرناک یا غیر قانونی رویے کو فروغ دیتا ہے وہ ہماری کمیونٹی گائیڈلائنز کی خلاف ورزی کا مرتک ہوگا اور ہمارے پلیٹ فارم پر اُس کی کوئی جگہ نہیں ہو گی۔

ترجمان نے کہا کہ ہم خطرناک اور غیر قانونی سرگرمیوں کو فروغ دینے والے مواد کو یا تو ہٹا دیتے ہیں ورنہ محدود یا لیبل کرنے کے لیے کوشاں ہوتے ہیں ہم صارف کی حفاظت کے اپنے وعدہ کو پورا کرنے کے لیے متحرک رہتے ہیں اور ترغیب دیتے ہیں کہ ہر فرد اپنے رویے میں احتیاط اور ذمہ داری کا مظاہرہ کرے چاہے آن لائن ہو یا آف لائن۔

Comments

یہ بھی پڑھیں