جے آئی ٹی ارکان کی رپورٹ بدنیتی پر مبنی ہے: مریم اورنگزیب -
The news is by your side.

Advertisement

جے آئی ٹی ارکان کی رپورٹ بدنیتی پر مبنی ہے: مریم اورنگزیب

اسلام آباد: وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ میں درخواست دی ہے کہ جے آئی ٹی رپورٹ کی جلد نمبر 10 کو منظر عام پر لایا جائے۔ انہوں نے جے آئی ٹی رپورٹ کو ارکان کی بدنیتی پر مبنی قرار دیا۔

تفصیلات کے مطابق پاناما کیس کی تفتیش کے لیے بنائی بنائی جانے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) کی رپورٹ سپریم کورٹ میں پیش ہونے کے بعد آج پہلی سماعت ہوئی۔

سماعت کے بعد سپریم کورٹ سے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ کی جلد نمبر 10 کو منظر عام پر لانے کے لیے عدالت میں درخواست دائر کی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی نے جہاں جہاں جھوٹ بولا، وہ رپورٹ کی دسویں جلد سے پتہ چل جائے گا۔ دسویں جلد منظر عام پر آئی توسب کو پتہ چل جائے گا کہ جے آئی ٹی کا مقصد کیا ہے۔ ’جے آئی ٹی کے ارکان کی رپورٹ بدنیتی پر مبنی ہے‘۔

وزیر کے مطابق جے آئی ٹی کی سفارشات سپریم کورٹ پر لاگو نہیں ہوتیں۔ سپریم کورٹ آئین اور قانون کے مطابق فیصلہ کرے گی۔

مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ رپورٹ دینے کے بعد جے آئی ٹی اب تک کیوں کام کر رہی ہے۔ ’کس قانون کے تحت جے آئی ٹی ابھی تک کام جاری رکھے ہوئے ہے۔ جے آئی ٹی سے متعلق تمام تحفظات آج بھی قائم ہیں‘۔

وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی کو شریف خاندان کی جانب سے پیش کردہ دستاویزات تصدیق شدہ ہیں۔ لیکن جو دستاویز تصدیق شدہ نہیں انہیں استعفے کی بنیاد بنایا جا رہا ہے۔ مخالفین اس پر الزام لگا رہے ہیں جس پر بدنیتی پر مبنی رپورٹ کچھ ثابت نہ کر سکی۔

جے آئی ٹی رپورٹ مفروضوں پر مبنی

سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما دانیال عزیز نے جے آئی ٹی رپورٹ کو مفروضوں پر مبنی قرار دیا۔

دانیال عزیز نے حسب معمول پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ خود اشتہاری ہیں، اپنی ضمانت کیوں نہیں کرواتے۔ تحریک انصاف کے وکیل غیر ملکی فنڈنگ کا اعتراف کر چکے ہیں۔ تحریک انصاف دوسرے کیسز میں پیش نہیں ہوتی اپنے وکیل بدلتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کون سا انوکھا دباؤ ہے جو صرف ایک شخص کے لیے استعمال ہو رہا ہے۔

دانیال عزیز کا مزید کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف کی جانب سے جواز کی باتیں افسوس ناک ہیں۔ مخالفین کے وکلا نے عدالت میں روایتی ڈراما جاری رکھا۔ درخواست سے تعلق نہ رکھنے والے سیاست دان بھی آج عدالت پہنچے۔


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں