توہین عدالت کی سزا ہے، مگر ووٹ کی توہین کی کوئی سزا نہیں: مریم نواز Maryam Nawaz
The news is by your side.

Advertisement

گاڈ فادر ہم نہیں تم ہو،توہین عدالت کی سزا ہے، مگر ووٹ کی توہین کی کوئی سزا نہیں؟ مریم نواز

جڑانوالہ: مسلم لیگ کی رہنما مریم نواز نے کہا ہے کہ عوام کی عدالت سب سے بڑی عدالت ہے، کیا عوام کو ایسا پاکستان چاہیے، جہاں وزیراعظم کو اقامے پرنکال دیا جائے.

ان خیالات کا اظہار انھوں‌ نے جڑانوالہ میں‌ مسلم لیگ ن کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا. مریم نواز نے عدلیہ پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ پاناما میں نوازشریف کانام نہیں تھا، اسے کرپشن کا رنگ دیا گیا، تو ججوں نے مجرمانہ خاموشی اختیارکرلی.

مریم نواز نے معزز عدلیہ پر تیر برساتے ہوئے کہا کہ سسلین مافیااورگاڈ فادر ہم نہیں تم ہو، یہاں‌ توہین عدالت کی تو سزا ہے، ووٹ کی توہین کرنے والوں کے لئے کوئی سزا نہیں، یہاں سزا پہلے اور مقدمہ بعد میں چلایا جاتا ہے۔

انھوں‌ نے عمران خان پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ہم سوال پوچھیں توتوہین عدالت کے پیچھے چھپ جاتے ہیں. لاڈلہ کہتا ہے، ہاں میری آف شورکمپنی تھی، مگر پھر بھی اسے صادق امین کہا گیا، منصفوں سے سوال پوچھا جائے، تو وہ ٹی وی پرآکرتقریریں کرتے ہیں۔

جڑانوالہ کہہ رہا ہے کہ ہم ججوں کا فیصلہ نہیں مانتے: نوازشریف

انھوں‌ نے کہا کہ نوازشریف انصاف لینے جائے تواسے گالی دی جائے کہ تم ڈون ہو،مافیا ہو، گاڈ فادر ہو،عمران خان کوکہا تم نوازشریف کونہیں نکال سکتے، تو کیس ہمارے پاس لے آؤ، ہم نکالیں گے، پاناما میں نوازشریف کا نام نہیں تھا، اسےکرپشن کارنگ دیا گیا تو ججوں نے مجرمانہ خاموشی اختیارکرلی۔

انھوں‌ نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اٹھو نوازشریف کا ساتھ دو اورسازشی مہروں کوسبق سکھا دو.

یاد رہے کہ جڑانوالہ میں سابق نااہل وزیر اعظم نے تقریر کرتے ہوئے کہا تھا کہ آج کل سپریم کورٹ میں تمام مقدمات میرے خلاف لگے ہوئے ہیں۔ یہ زندگی بھرکے لئے نااہل کردیں پھربھی عوام سے رشتہ نہیں ٹوٹے گا۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں