The news is by your side.

Advertisement

چوہدری شوگر ملز کیس : مریم نواز مزید 7 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

لاہور : احتساب عدالت نے چوہدری شوگر ملز کیس میں مریم نواز اور یوسف عباس مزید 7 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا ، مریم نواز شریف کی پیشی کے موقع پر کمرہ عدالت میں بد نظمی پر احتساب عدالت کے جج نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کی احتساب عدالت میں چوہدری شوگرملز کیس کی سماعت ہوئی ، احتساب عدالت کے جج چوہدری امیرخان نے کیس کی سماعت کی، سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کو سخت سکیورٹی میں عدالت پیش کیا گیا جبکہ یوسف عباس بھی پیش ہوئے۔

دوران سماعت نیب کے تفتیشی افسرنے مریم نواز کے مزید 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی، نیب پراسیکیوٹر نے کہا چوہدری شوگر مل میں 7 ڈائریکٹرز اور 20 افراد پارٹنر شپ میں تھے، میاں شریف،کلثوم نواز،حسین ،مریم نواز بورڈ آف ڈائریکٹرز میں تھے۔

عدالت نے نیب افسر سے استفسار کیا چوہدری شوگر مل کا سربراہ کون تھا، جس پر تفتیشی افسر نے بتایا مختلف وقت میں فیملی کےلوگ چیف ایگزیکٹو مقرر ہوتے رہے، 1992میں حسین نواز چیف ایگزیکٹو مقرر ہوئے۔

عدالت نے سوال مریم نواز کب چیف ایگزیکٹو مقرر ہوئیں تو تفتیشی افسر نے جواب میں کہا مریم نواز 2004 میں چوہدری شوگر مل کی چیف ایگزیکٹو مقرر ہوئیں۔

تفتیشی افسر نے کہا یوسف عباس اور عبدالعزیز کے اکاونٹ میں 23 کروڑ کی رقم 2013 میں دوبئی سے منتقل ہوئی، یوسف عباس ابھی تک نہیں بتا سکے کہ یہ رقم کس نے بھیجی، شیئرز،قرضوں ،بیرون ممالک سے آنیوالی رقوم کی تفتیش باقی ہے ۔

جس پر مریم نواز کا کہنا تھا کہ مجھ سےتفتیش میں پوچھتے ہیں کہ دادا نے آپ کو شئیرز کیوں ٹرانسفر کیے، میں اس کا کیا جواب دوں کہ ایک دادا اپنے خاندان کو ٹرانسفر کر رہا ہے غیروں کو نہیں، مجھے سیاسی بنیادوں پر گرفتار کیا گیا،م یں جلسے کر رہی تھی اس لیے قید کیا جانا ضروری تھا۔

عدالت نے مریم نواز اور یوسف عباس کےجسمانی ریمانڈ میں سات روزہ توسیع کردی اور دونوں ملزموں کو 25 ستمبر کوپیش کرنے کا حکم دے دیا جبکہ مریم نواز شریف کی پیشی کے موقع پر کمرہ عدالت میں بدنظمی پرعدالت نے سخت اظہار برہمی کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں