site
stats
پاکستان

پاناما میں کرپشن کی دستاویزات ملی ہیں،ساری اصلی ہیں، جرمن صحافی، مریم کو جواب

لاہور: وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا ہے کہ پاناما ردی کا ٹکڑا اور دنیا کے لیے کچرا ہے اس پہ انحصار کرنے والے لوگ خاک چھانیں گے دوسری جانب جرمن صحافی نے کہا ہے کہ پاناما پیپرز میں ہمیں کرپشن سے متعلق دستاویزات ملی ہیں جو کہ تمام اصلی ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں انہوں نے کہا کہ پاناما کیس پہ انحصار کرنے والے اور اس کے ذریعے نواز شریف کو دباؤ میں لانے کی کوشش کرنے والے خاک چھانیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاناما ردی بن چکا ہے اور دنیا بھر میں اس کی حیثیت کچرے سے زیادہ نہیں اس لیے پاناما کو وزیراعظم  کے خلاف استعمال کرنے والوں کو منہ کی کھانا پڑے گی۔

 مریم نواز نے یہ ٹوئٹ ایک ٹوئٹ کے جواب میں کی جس کے تحت نواز شریف کو پاناما کے معاملے کے بعد آج لیہ میں زیادہ پُر اعتماد اور پُر جوش نظر آئے کیوں کہ ان کا مطمع نظر گڈ گورننس اور ترقیاتی پروجیکٹس کی تکمیل ہے۔

بعد ازاں تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے مریم نواز کی ٹوئٹ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ پاناما ردی کا ٹکراؤ ہوتا تو سپریم کورٹ اس پر جے آئی ٹی نہ بنواتی اور ہم نے نہیں بلکہ سپریم کورٹ نے وزیراعظم کو کرپشن میں ملوث پایا اور انہیں جھوٹا کہا ہے اس لیے دو ججوں نے انہیں نااہل قرار دیا تھا اورتین نے تحقیقات کا حکم دیا۔

تحریک انصاف کا ردعمل آنے کے بعد مریم نواز شریف نے ایک اور ٹوئٹ میں کہا کہ پاناما کبھی بھی کرپشن سے متعلق نہیں رہا بلکہ اس دستاویز کو چوری کرنے والے اور ہیک کرنے والوں نے بھی اسے کرپشن کا ثبوت کہا ۔

 انہوں نے اپنی ایک ٹوئٹ میں تحریک انصاف کے سربراہ کا نام لیے بغیر کہا کہ پاناما پیپرز کو خیبر پختونخوا کی بری کارکردگی پر پردہ ڈالنے کے لیے استعمال کرنے سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا کیوں کہ اب ووٹرز تو بیدار اور باشعور ہو گئے ہیں لیکن آپ اب تک میچیور نہیں ہوسکے ہیں۔

معذرت کے ساتھ پاناما میں کرپشن کی دستاویزات ملی ہیں جو کہ ساری اصلی ہیں، جرمن صحافی

ٹوئٹ پر شروع ہونے والی یہ بحث اس وقت اور مزید طوالت اختیار کر گئی جن ایک جرمن صحافی  بیسٹین اوبرمیئر نے مریم نواز کی ٹوئٹ کے جواب میں کہا کہ پاناما پیپرز میں ہمیں کرپشن سے متعلق دستاویز بھی ملی ہیں اور کہا کہ معذرت کے ساتھ یہ پاناما پیپرز کرپشن کے بارے میں ہی ہے جو کہ سب اصلی ہیں۔

مریم نواز شریف نے جرمن صحافی کو اپنے جواب میں کہا کہ اس معاملے پر زیادہ کچھ نہیں کہنا چاہتی تاہم افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ آپ خود اور پاکستان سے تعلق رکھنے والے آپ کے  صحافی دوست ایک منتخب اور مقبول حکومت کو گرانے کی ساش کا حصہ بن گئے ہیں۔

قبل ازیں مریم نواز شریف اپنے ایک اور ٹوئٹ میں پاناما پیپرز کو لیک کرنے والے صحافیوں پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ پاناما پیپرزوالےصحافیوں کادردسمجھ میں آسکتاہے کیوں کہ وہ تمام تر کوششوں کے باوجود منتخب حکومت کو گرانے میں ناکام رہے اور انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top