site
stats
پاکستان

مشعال قتل میں ملوث مزید 5 ملزم گرفتار کرلئے گئے

پشاور : مشعال قتل میں ملوث مزید پانچ ملزم گرفتار کرلئے گئے، جس کے بعد گرفتار افراد کی تعداد 47 ہوگئی، فوٹیج کی مدد سے شناخت کئے گئے اننچاس میں سے صرف دو ملزم قانون کی گرفت سے آزاد ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مشعال قتل کیس ملوث مزید پانچ ملزم گرفتار کرلیے گئے، شناخت کئے گئے 49 میں سے 47 پکڑے گئے تاہم اب بھی دو مفرور ہیں، ڈی پی او مردان کا کہنا ہے کہ دو ملزمان قبائلی علاقوں میں روپوش ہوگئے ہیں، جن کی گرفتاری کیلئے کوششیں جاری ہیں۔

اس سے قبل پولیس نے قتل کے مرکزی ملزم عمران کو بھی گرفتار کیا تھا اور مشعال کو قتل کرنے والا کوئی اور نہیں مشعال کاکلاس فیلو ہی تھا، ملزم نےابتدائی تفتیش میں جرم کا اعتراف کرلیا۔

جس پسٹل سے فائرنگ کی گئی وہ بھی برآمد کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ 47 گرفتار ملزمان میں 12 یونیورسٹی ملازمین، 34 طالب علم جبکہ ایک باہر سے آنے والا شخص شامل ہے۔


مزید پڑھیں :  مشعال خان کو گولیاں مارنے والا مرکزی ملزم گرفتار


ڈی آئی جی نے کہا کہ واقعے میں یونیورسٹی کے ملازم بھی ملوث ہیں، مشال اور انتظامیہ کے درمیان اختلافات تھے۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز سپریم کورٹ میں مشعال خان کے قتل کی ازخود نوٹس کی سماعت میں صوبہ خیبر پختونخوا کے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے سپریم کورٹ کو بتایا تھا کہ مشعال خان قتل کے مقدمے کی تفتیش کرنے والی ٹیم کی ازسرنو تشکیل کر دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ 13 اپریل کو صوبہ خیبر پختونخواہ کے شہر مردان کی عبدالولی یونیورسٹی میں ایک مشتعل ہجوم نے طالب علم مشعال خان کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنا کر اسے موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔

مشعال پر توہین رسالت کا الزام لگایا گیا تاہم چند روز بعد انسپکٹر جنرل خیبر پختونخوا صلاح الدین محسود نے بتایا کہ مشعال کے خلاف توہین رسالت سے متعلق کوئی شواہد نہیں ملے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top