مشعال قتل کیس ، 57ملزمان پر فرد جرم عائدMashal Khan murder case
The news is by your side.

Advertisement

مشعال قتل کیس ، 57ملزمان پر فرد جرم عائد

ہری پور : مشعال قتل کیس میں انسداد دہشتگردی عدالت نے 57ملزمان پر فرد جرم عائد کردی۔

تفصیلات کے مطابق ہری جیل میں انسداد دہشت گردی کے جج جسٹس فضل سبحان نے مشعال قتل کیس کی سماعت کی، سماعت کے دوران انسداد دہشتگردی نے جیل میں قید ستاون ملزمان پر فرد جرم عائد کردی۔

عدالت نے حکم دیا کہ کل سے باقاعدہ کیس کا ٹر ائل شروع ہوگا۔

خیال رہے کہ ہری پور جیل میں قائم باچا خان وارڈ، جو اسپتال کا حصہ ہے اسے عارضی طورپر عدالت بنایا گیا ہے۔


مزید پڑھیں : دھمکیاں مل رہی ہیں، مقدمہ مردان سے پشاور منتقل کیا جائے، والد مشال خان


یاد رہے کہ مشعال خان کے  والد اقبال خان نے مقدمہ کیس کو ایبٹ آباد منتقل کرنے کی درخواست کی تھی ، جس میں کہا گیا تھا کہ مشال قتل کیس حساس نوعیت کا ہے اور اب بھی دھمکیاں مل رہی ہیں اس لیے کیس کا ٹرائل سینٹرل جیل میں کیا جائے۔

جس کے بعد پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحیٰی آفریدی نے مشعال قتل کیس مردان سے ہری پور جیل کی انسداد دہشت گردی کی عدالت منتقل کرنے کا حکم دیا تھا۔

واضح رہے کہ رواں سال 13 اپریل کوعبد الولی خان مردان یونیورسٹی میں 23 سالہ ہونہار طالب علم مشعال خان کو اہانت رسالت کا الزام لگا کر مشتعل ہجوم نے بے دردی کے ساتھ قتل کردیا تھا، جس کی تحقیقات کے لیے تیرہ رکنی جوائنٹ انوسٹیگیشن ٹیم تشکیل دی گئی تھی۔

چیف جسٹس آف پاکستان نے مشعال خان قتل کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے کہا تھا کہ مشال کا قتل نہ صرف والدین بلکہ پوری قوم کا نقصان ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں