site
stats
پاکستان

مشعال خان قتل: یونی ورسٹی ملازمین سمیت تین ملزمان گرفتار

مردان:مشعال خان قتل کیس میں پیش رفت کرتے ہوئے پولیس نے مزید تین ملزمان گرفتار کرلیا ہے، مردان کی ولی خان یونی ورسٹی کے طالب علم کو تینِ مذہب کے الزام میں طلبہ کے ہجوم نے قتل کیا تھا۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر مردان میاں سعید کے مطابق حالیہ پیش قدمی کے نتیجے میں گرفتار کیے گئے دوملزمان کومردان اورایک کوچارسدہ سےگرفتارکیاگیا ہے‘ دتین میں سے دو یونی ورسٹی کے ملازم ہیں جبکہ ایک طالب علم ہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق گرفتارشدہ ملزمان میں سے ایک ملزم یونیورسٹی کاسیکیورٹی افسرجبکہ دوسراکمپیوٹرآپریٹرہے تیسراگرفتارملزم ولیخان یونیورسٹی کاطالبعلم ہے،ڈی پی او کے مطابق تینوں ملزمان کو ویڈیو کی مدد سے گرفتار کیا گیا۔

مقدمہ درج‘ گرفتاریاں شروع

طالب علم کی ہلاکت کا مقدمہ تھانہ شیخ ملتون میں ایس ایچ او کی مدعیت میں درج کرلیا گیا ہے ، مقدمے میں 7اےٹی اے302اور297کےتحت درج کیاگیاتھا۔

واضح رہے رواں ماہ کی 13 تاریخ کو مردان میں ولی خان یونیورسٹی میں طلبہ تنظیموں میں تصادم کے نتیجے میں طالب علم مشال خان جان سے گیا تھا، تصادم میں ڈی ایس پی سمیت سات افراد زخمی بھی ہوئے، کشیدگی کے باعث یونیورسٹی غیرمعینہ مدت کے لیے بند کردی گئی تھی۔

ویڈیو دیکھئے


کچھ دن قبل مشعال کے بہیمانہ قتل سے پہلے کی ایک اور ویڈیو سامنے آئی تھی ، ویڈیو میں مشتعل ہجوم کمیٹی روم کے باہر مشعال کے ساتھی عبداللہ پر تشدد کے بعد مشعال کو ڈھونڈ رہا ہے اور کہہ رہے ہیں اس کو پولیس کے حوالے کریں گے تو ہم جیل بھی جاکے اسے ماریں گے۔ یہ بھی کہا گیا مشعال مسجد میں بھی ملے تو ما ردو۔

فوٹیج میں پولیس اہلکار بھی نظرآئے، جنہوں نے مشتعل افراد کو منتشر کرنے کی کوئی کوشش نہیں کی۔ ویڈیو میں موجود ہجوم شدید اشتعال میں کہتا دکھا ئی دے رہا ہے کہ مشال کہیں بھی ملے اسے قتل کردیا جائے

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top