site
stats
پاکستان

مشال قتل کیس:‌ ویڈیو کی مدد سے مزید چار ملزمان گرفتار، تعداد 54 ہوگئی

مردان:  خیبرپختواہ پولیس نے مشال قتل کیس ویڈیو کی مدد سے مزید چار ملزمان گرفتار کرلیے جس کے بعد گرفتار افراد کی تعداد 54 ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق مردان کی عبدالولی یونیورسٹی میں شعبہ ابلاغ عامہ کی تعلیم حاصل کرنے والے طالب علم پر یونیورسٹی انتظامیہ اور ساتھی طلبہ کے جھوٹے الزام کے بعد تشدد سے جاں بحق ہونے والے مشال خان کے قاتلوں کی گرفتاری کا سلسلہ جاری ہے۔

خیبرپختونخواہ پولیس کے مطابق مشال قتل کیس میں ویڈیو کی مدد سے شناخت کیے گئے مزید چار افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے جس کے بعد ملزمان کی تعداد 54 ہوگئی۔ چاروں افراد کو عدالت میں پیش کر کے اُن کا چار روزہ جسمانی ریمانڈ لیا گیا ہے۔

دوسری جانب سینیٹ اجلاس میں مشال خان قتل کے حوالے سے پیش کی جانے والی تحریک پر پی پی کے سینیٹر فرحت اللہ بابر نے اظہار خیال کرتے ہوئے ’’لوگوں نے سیلفیاں تو بنائیں مگر مشال کو کسی نے نہیں بچایا، یہ کوئی پہلا واقعہ ماضی میں بھی توہین رسالت قانون کو غلط استعمال کیا گیا ہے جس کو روکنے کےلیے پارلیمان کو ہی کردار ادا کرنا ہوگا‘‘۔

عوامی نیشنل پارٹی کے سینیٹر اعظم سواتی نے کہا کہ مشال ہم سب کا بیٹا تھا، انتہاء پسند مائنڈ سیٹ کو ختم کرنے کے لیے علماء اور میڈیا کو ہمارا ساتھ دینا ہوگا، صوبائی پولیس نے کیس کے معاملے میں مثبت کام کیا‘‘۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top